جامعہ پشاورمیں ہاسٹل کا تنازعہ شدت اختیار کرگیا

جامعہ پشاورمیں ہاسٹل کا تنازعہ شدت اختیار کرگیا


پشاور ( 24نیوز ) جامعہ پشاورمیں ہاسٹل کا تنازعہ شدت اختیار کرگیا۔ رات کو پولیس نے ریڈ کرتے ہوئے200سے زاید طلباء گرفتار کیے تو طلباء تنظیمیں بھی احتجاج کے لیے میدان میں اترے۔

 جامعہ پشاور میں رات کے وقت پولیس نے کیا سرچ اپریشن اور گرفتار کیے متعدد غیرقانونی افراد جبکہ طلباء کے نام پہ سیاست چمکانے  والوں کو  بھی پولیس نے حراست میں لیا۔  انتظامیہ کے مطابق  عرصہ دراز سے غیرقانونی طور پر یہاں سینکڑوں افراد ہاسٹل کے کمروں پر قابض تھے ۔ جس کے خلاف اپریشن کرنا  ناگزیر تھا۔

یہ بھی پڑھیں:سرکاری سکولوں میں اب وہ ہوگا جو پہلے کبھی نہ ہوا 

دوسری جانب گرفتار کیے گیے طلباء کے حق میں پشاور پریس کلب کے سامنے احتجاج کرتے ہویے جمیعت طلباء تنظیم نے پولیس کی جانب سے ریڈ کو کھلی دہشت گردی اور پولیس گردی قرار دے رہے ہیں۔ یونیورسٹی انتظامیہ نے موقف اپنایا کہ مستقبل میں ہاسٹل کے کمرے صرف حق دار طلباء کو ملیں گے اور سیاسی سرگرمیوں کی قطعی اجازت نہیں دی جایے گے۔

شازیہ بشیر

   Shazia Bashir   Edito