تبدیلی سرکارپہلےسال اقتصادی امتحان میں فیل

تبدیلی سرکارپہلےسال اقتصادی امتحان میں فیل


اسلام آباد(24 نیوز) مشیر خزانہ ڈاکٹر عبد الحفیظ شیخ نے اقتصادی سروے رپورٹ برائے مالی سال 19-2018 پیش کردی.

مشیرخزانہ عبدالحفیظ شیخ اقتصادی سروے میں معاشی ترقی کا ہدف پورا نہ ہونے کا اعتراف کرلیا،  کہتے ہیں طویل عرصے سے ملکی وسائل پر توجہ نہیں دی گئی، مشکل صورتحال سے نکلنے کے لیے اقدامات کررہے ہیں، ماضی کی حکومتوں نے ملک کوقرضوں کے دلدل میں پھنسایا اور موجودہ حکومت نے اقتدار سنبھالا تو معیشت زبوں حالی کا شکار تھی لیکن معاشی استحکام کے لیے مثبت اقدامات کیے جارہے ہیں۔

 ماضی میں وزیرخزانہ کےمنصب پرفائزرہنےوالےمشیرخزانہ ڈاکٹرعبدالحفیظ شیخ تحریک انصاف کے رنگ میں رنگ گئے، پی ٹی آئی رہنماوں کی طرح معاشی ناکامی کی ذمہ داری سابقہ حکومتوں پرڈال دی، اقتصادی سروےرپورٹ 19-2018 پیش کرتےہوئےکہا کہ موجودہ حکومت نےاقتدارسنبھالاتواندرونی قرض31 ہزار ارب روپےاوربیرونی قرض100ارب ڈالرتک پہنچ چکاتھا۔

انہوں نے کہا کہ گذشتہ10 برسوں میں ملکی ایکسپورٹ میں اضافہ نہیں ہوا، 2 برسوں میں زرمبادلہ کے ذخائر 18 ارب ڈالرسےکم ہوکر9 ارب ڈالرتک پہنچ گئے، اس کاذمہ دارکون ہے؟حفیظ شیخ نےخبردارکیاکہ بجٹ خسارے کو کنٹرول نہ کیا گیا تو ملک دیوالیہ ہوسکتا ہے،وزیراعظم نے فیصلہ کیاکہ مشکل فیصلےکیےجائیں گے۔

حفیظ شیخ نےکہاکہ آئندہ بجٹ میں کفایت شعاری پرسختی سےعمل کیاجائےگا، کسی کو قومی خزانے کا ایک ٹکہ خرچ نہیں کرنےدیاجائےگاچاہےکوئی کتنابڑا آدمی ہی کیوں نہ ہو۔