بہاولپور: ن لیگ کا جلسہ، مریم نواز کی کارکنوں کے ساتھ سیلفیاں اور گو نواز گو کے نعرے


بہاولپور (24 نیوز) میں مسلم لیگ ن کے جلسے میں نواز شریف اور مریم نواز نے عوام سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ سینیٹ الیکشن میں عمران خان نے زرداری کا ہاتھ تھام کر عوامی ووٹ کی توہین کی ہے۔ عوام ہمارے ساتھ ہے فیصلہ جو بھی ہو ووٹ ہمیں ہی ملے گا۔

بہاولپور میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے سابق وزیراعظم نواز شریف نے کہا کہ بہاولپور نئی تاریخ رقم کر رہا ہے۔ بہاولپوریوں نے تو الیکشن سے پہلے ہی ریفرنڈم کر ڈالا ہے۔

میاں نواز شریف نے کہا کہ بہاولپور میرا دوسرا گھر ہے۔ اگر ہم کامیاب ہوئے تو اگلی میٹرو بس بہاولپور میں بنائی جائے گی۔ جلد ہی لاہور جانے کے لیے 6 روئیہ موٹر وے بنا دی جائے گی جس سے بہاولپور کے شہری لاہور بآسانی جا اور آ سکیں گے۔

مریم نواز نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کس طرح سینیٹ کے الیکشن کے لیے نمائندوں کی منڈیاں لگی ہوئیں ہیں۔ آج ووٹ کی پہلے سے زیادہ ضرورت ہے۔ پچھلے دنوں کس نے اپنے ارکان کے بکنے کا شور مچایا تھا۔ عمران خان بہت جلد روئے گا۔

نواز شریف اور مریم نواز کے خطاب سے پہلے ڈائس پر لگے بلٹ پروف شیشے ہٹوا دیئے گئے۔ مریم نواز نے کارکنوں کے ساتھ سیلفیاں بھی بنائیں، جلسہ میں کیپٹن صفدر، پرویز ریشید، میاں بلیغ الرحمن، میئر بہاولپور علی حسن گیلانی قاضی عدنان فرید، میاں نجیب الدین اویسی سمیت دیگر اہم رہنما بھی اسٹیج پر نظر آئے۔

مسلم لیگ کے بہاولپور میں ہونے والے جلسہ کے لیے ضلعی انتظامیہ اور پولیس کی جانب سے شہر کی مرکزی شاہراہوں کو رکاوٹیں کھڑی کر کے عام ٹریفک کے لیے بند کر دیا گیا۔ بیشتر ٹریکٹر ٹرالیوں اور کنٹینرز کو زبردستی پکڑ کر راستے بند کرنے کے لیے کھڑا کیا گیا۔

اس موقعہ پر شہریوں کا کہنا تھا کہ پولیس زبردستی سڑکیں بند کرنے کے لیے انہیں لائی ہے۔

نواز شریف کی ڈرنگ اسٹیڈیم بہاولپور آمد کے موقع پر لاری اڈا، فرید گیٹ، موری دروازہ، یونیورسٹی چوک اور ماڈل ٹاؤن چوک سمیت مرکزی شاہراہوں پر صبح 10 بجے سے ہی رکاوٹیں کھڑی کر دیں گئیں۔ اس سے شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔

یہ بھی پڑھئے:عمران خان نے آصف زرداری کے سامنے ہتھیار ڈال دیئے، مریم نواز کا انکشاف 

بہا ولپور میں ڈر نگ اسٹیڈیم میں ہونے والے نواز شر یف کے جلسہ میں بہت مزے دار چیزیں بھی دیکھنے کو ملیں۔ جلسہ تھا بھی ن لیگ کا اور نعرے بھی لیگ کے خلاف ہی لگتے رہے ۔ شرکا نے جلسہ میں گو نواز گو اور گو شہباز گو کے نعرے اور ساتھ ہی با آواز بلند کہتے رہے کہ شر م کر حیا کر و، بہاولپور سے اپنا وعدہ پورا کر و۔

 مسلم لیگ ن کے بہاولپور جلسہ میں بھی بدنظمی کا دور دورہ دیکھنے میں آیا۔ جلسہ شروع ہونے سے پہلے ہی بدنظمی کا شکار ہو گیا تھا۔ کارکنان کی ایک دوسرے پر ڈنڈوں اور تھپڑوں کی بارش کرتے رہے۔ ہر طرف شور پھیل گیا اور صورتحال قابو باہر ہو گئی۔

میاں صاحب کی جلسہ میں یہی نہیں اور بھی بہت ہوا۔ پارکس ہارٹیکلچر اتھارٹی کو لاکھوں کا نقصان بھی پہنچا دیا گیا۔ سائن بورڈز پر فلیکسز لگانے کی قیمت پنجاب ہائی وے اتھارٹی کو ادا ہی نہیں کی گئی۔

ویڈیو دیکھیں: