اقتدار آخری سانسوں پر،حکومت نے ہاتھ پاوں مارنا شروع کر دئیے

اقتدار آخری سانسوں پر،حکومت نے ہاتھ پاوں مارنا شروع کر دئیے


اسلام آباد(24نیوز) اقتدار کے آخری دنوں میں حکومت کو منی مارکیٹ سے مزید قرضے ملنا بند ہوگئے،پرانےقرضوں کی واپسی کیلئے حکومت کو 12 کھرب روپے کی ضروت تھی، لیکن تمام تر کوششوں کے باجود 5 کھرب روپے بھی نہ مل سکے۔

تفصیلات کے مطابق حکومت نے رواں ہفتے کے دوران 11 کھرب 87 ارب 2 کروڑ روپے کے اندرونی قرضے واپس کرنے ہیں۔ اس سلسلے میں حکومت کی طرف سے ٹرثری بلز کی نیلامی کی گئی۔ جس سے 950ارب روپے کے حصول کا ٹارگٹ رکھا گیا تھا۔  اسٹیٹ بینک کے مطابق پرائمری ڈیلرز کی طرف سے مجموعی طور پر 574 ارب 80 کروڑ روپے مالیت کے بلز ہی خریدنے کی پیشکش کی گئی۔

یہ بھی ضرور پڑھیں:وزیر اعلیٰ پنجاب کا استقبال ایک مریض کی جان لے گیا 

 واضح رہے کہ ان میں 3 ماہ کی مدت کے 550 ارب 61 کروڑ روپے اور 6 ماہ کی مدت کے لیے 24 ارب روپے کے بلز خریدنے کی پیشکش تھی۔ 12 ماہ کی مدت کے بلز خریدنے میں کسی نے دلچسپی نہیں لی۔حکومت کی طرف سے مجموعی طور پر 4 کھرب 77 ارب 7 کروڑ روپے کے بلز ہی فروخت کیے گئے۔ حکومت کو قرض لوٹانے کے لیے 7 کھرب 10 ارب روپے دوسرے وسائل سے حاصل کرنا پڑیں گے۔