ٹیکس کا نیا کوڑاعوام کی کمرپربرسنے کو تیار

ٹیکس کا نیا کوڑاعوام کی کمرپربرسنے کو تیار


اسلام آباد(24نیوز)  حکومت آئی ایم ایف سے قرضہ حاصل کرنے کیلئے کسی بھی حد تک جانے کو تیارہے، کل تک قرضہ نہ لینے کا دعویٰ کرنے والے آج بجلی اورگیس مہنگی کرنے کے علاوہ غریب عوام پر700ارب روپے کے نئے ٹیکس لگانے پربھی راضی ہوگئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق ٹیکس کا نیا کوڑا22کروڑعوام کی کمرپربرسنے کو تیار ہے،اس کوڑے کی زد سے اب غربت کی لکیر سے نیچے زندگی گزارنے والےبھی نہ بچ سکیں گے،پلان بھی تیارکرلیاگیا،ایف بی آر نے اپنی کارکردگی دکھانے کیلئے آئی ایم ایف کو اگلے 700ارب کے نئے ٹیکس لگانے کا منصوبہ پیش کردیا ہے،جس میں پرچون پر ٹیکس لگانے کی بھی تجویز ہے، بجٹ میں چینی اورگیس سمیت تقریباتمام اشیا مہنگی ہونے کا امکان ہے،انڈسٹریزاورپاورپلانٹس کے لیے ایل این جی کی درآمدپر3فیصدکسٹمزڈیوٹی کی چھوٹ ختم کرکے5فیصدکسٹمزڈیوٹی عائد کرنےکی سفارش کی گئی ہے۔

الیکٹرانکس اورفوم انڈسٹری کی مصنوعات کی پرچون قیمت پرسیلزٹیکس لاگوکرنےکی تجویزدی گئی ہے،سگریٹ اور مشروبات پر فیڈرل ایکسائزڈیوٹی بڑھانےکی تجویزبھی دی گئی ہے،صنعتوں اوربجلی کی پیداوار میں استعمال میں ہونیوالی ایل این جی کی درآمد پر تین فیصدکسٹمز ڈیوٹی کی چھوٹ ختم کرکے پانچ فیصد کسٹمز ڈیوٹی عائد کرنےکی سفارش کی گئی ہے جس سے بجلی اور صنعتی اشیاءمزید مہنگی ہونے کا امکان ہے۔

آئندہ بجٹ میں مراعات یافتہ لوگوں، اداروں، امدادی اشیاء اور برآمدی اشیاءمیں استعمال ہونےوالےخام مال اور پلانٹس ومشینری کی درآمد پر کسٹمز ڈیوٹی و ایڈیشنل کسٹمز ڈیوٹی کی چھوٹ و رعایات برقرار رکھنے کی سفارش کی گئی ہے،حتمی فیصلہ مشیرخزانہ کی منظوری کے بعد بجٹ میں کیا جائےگا۔