"این آر او د ینے سےمعاشرے کا بیڑہ غرق ہوتا"



اسلام آباد( 24نیوز ) وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ نبی کریم ﷺنےبدعنوان عناصرکوعبرتناک سزائیں دیں، ملک کوکنگال کرنےوالوں کومعاف کرنےکامجھےاختیارنہیں, این آر او دے دے کر ہم نے معاشرے کا بیڑہ غرق کردیا۔

تفصیلات کے مطابق انٹرنیشنل رحمتہ اللعالمین کانفرنس میں وزیراعظم عمران خان نےخطاب کرتے ہوئے کہا کہ میراریاست مدینہ کی بات کرنامیری زندگی کاتجربہ ہے، نوجوان حیات طیبہ ﷺکومشعل راہ بنائیں،پہلےمیرےرول ماڈل کوئی اور لوگ تھےبعد میں آپ ﷺمیرے رول ماڈل قرار پائے، میراایمان ہےکوئی عظیم انسان بنناچاہتاہےتوآپﷺکورول ماڈل بنائے،جوبھی آپﷺکےقریب لوگ تھےوہ سب عظیم انسان بن گئے۔

ہم اپنے نظام تعلیم میں آپﷺکی جدو جہد کا بتائیں گے,اگر قوم کوعظیم بنناہےتوریاست مدینہ کےاصول پرچلناہے،جوبھی آپﷺکےقریب لوگ تھےوہ سب عظیم انسان بن گئے،یہ معجزہ ہے آپﷺ کےوصال کے 6سال بعد دونوں سپر پاورزنےاسلام کےسامنے گھٹنے ٹیک دیے، ریاست مدینہ کی بنیاد پرصدیوں تک مسلمان دنیاپرچھائےرہے، ریاست مدینہ کی باتیں میں نےالیکشن سےپہلے نہیں بعد میں کیں میں یہ نہیں چاہتاتھاکہ لوگ سمجھیں کےووٹ کیلئے ریاست مدینہ کی بات کر رہا ہوں۔

لوگ مجھےکہتےہیں جنھوں نےپیسالوٹاانہیں معاف کرد،پیسامیرانہیں قوم کاہے،پیسابنانا مشن نہیں، پیسےسےانسانوں کی زندگی بہتر بنانامشن ہے،ہماراکام جدوجہدکرنا،عزت اورکامیابی دینااللہ تعالیٰ کاکام ہے،معاشرےمیں میرٹ ختم ہونےپرکوئی معاشرہ اوپرنہیں جاسکتا،میراایمان ہےپاکستان اٹھےگا، سچائی ہی مسلمان کی سب سےبڑی طاقت ہے،رحم کمزوراورغریب طبقےکےلیےہے،بڑےڈاکوؤں پررحم نہیں کیاجاتا، این آراودےکرہم نےمعاشرے کابیڑاغرق کردیا،لوگ اگر ٹیکس نہیں دیں گے تو ملک کیسے چلے گا۔

نبی کریم ﷺنےبدعنوان عناصرکوعبرتناک سزائیں دیں، ملک کوکنگال کرنےوالوں کومعاف کرنےکامجھےاختیارنہیں,لوٹ مارکرنےوالوں پررحم اوراین آراوزسےمعاشرے کابیڑاغرق ہوتاہے،ہمیں پاکستان کومدینہ کےاصولوں پرایک عظیم ریاست بناناہے،سیاست،بیوروکریسی سمیت ہر جگہ ہمارے سامنے مافیا بیٹھا ہے،ہم اپنےملک کو ریاست مدینہ کےاصولوں پرلاکر رہیں گے،نبی کریم ﷺنےمعاشرے میں انصاف،میرٹ اورتعلیم پرزور دیا,عالم کابڑا درجہ ہےمیں چاہتا ہوں کہ علماء ہماری مددکریں،علماء نےقوم کی رہنمائی کرنی ہے۔

آپﷺآخر وقت تک مسجد نبوی میں اپنےحجرے میں رہےکوئی محل نہیں بنائے،ہماری یونیورسٹیوں میں ریاست مدینہ پرتحقیق ہونی چاہیے،جدیدٹیکنالوجی کےدورمیں بچوں کواسلامی تعلیمات سےروشناس کراناضروری ہے،رسول پاک ﷺکی تعلیمات کوعالمگیر حیثیت حاصل ہے،جوآپﷺکےراستے پرچلتا ہےوہ بڑا انسان بن جاتاہے,رسول پاک ﷺنےوراثت میں جائیدادیں نہیں چھوڑیں۔