سینیٹ اجلاس: فواد چودھری اور مشاہداللہ میں صلح ہوگئی

سینیٹ اجلاس: فواد چودھری اور مشاہداللہ میں صلح ہوگئی


اسلام آباد( 24نیوز )سینیٹ اجلاس میں آج پھروزیراطلاعات اورلیگی رہنمامشاہداللہ کےدرمیان میچ پڑارہا۔ دونوں رہنماؤں نےایک دوسرےپرسخت جملوں کی بوچھاڑکیے رکھی۔سخت گرماگرمی کے بعدآخرمعاملہ صلح پرختم ہوا۔

فوادچودھری اورمشاہداللہ ایک بارپھرالجھ پڑے جس سے سینیٹ کا ایک اور اجلاس شور شرابے کی نظر ہوگیا لیکن گرما گرمی کے بعد دونوں میں صلح ہوگئی۔

چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کی زیرصدارت سینیٹ کا اجلاس ہوا تووفاقی وزیر فواد چوہدری کی ایوان میں آمد پر مشاہد اللہ نے اعتراض کرتے ہوئے کہا کہ فواد چوہدری پھر اجلاس میں شریک ہو گئے، یہ پہلے معافی مانگیں۔ 

مشاہد اللہ کے مطالبے پر فواد چوہدری نے کہاکہ میں کس بات کی معذرت کروں۔انہوں نے ایک بار پھر مشاہد اللہ خان پر الزام لگاتے ہوئے کہا کہ ان لوگوں نے پی آئی اے کو تباہی کے دہانے پر پہنچا دیا،ان سے کس بات کی معافی مانگوں؟فواد چوہدری کے الزامات پر مشاہداللہ خان بھی بپھر گئے اور انہوں نے وفاقی وزیر کے خلاف سخت زبان استعمال کی جس پر چیئرمین سینیٹ نے انہیں بھی معذرت کرنے کو کہا لیکن دونوں نے معذرت کرنے سے انکار کردیا۔

وفاقی وزیر کے الزامات پر اپوزیشن اراکین نشستوں پر کھڑے ہوگئے اور ایوان میں شور شرابا شروع کردیا۔وزیر مملکت شہریار آفریدی اور سینیٹ میں قائد ایوان شبلی فراز فواد چوہدری کو ایوان سے لے کر باہر چلے گئے جب کہ سابق چیئرمین سینیٹ رضا ربانی بھی مشاہد اللہ خان کو لے کر صلح کرانے لابی میں لے گئے۔

دونوں رہنماؤں کے درمیان جرگہ ہوا جس میں آپس میں صلح ہوگئی۔صلح کےبعدمشاہد اللہ خان اور فواد چوہدری ایوان میں واپس آئے تو ممبران نے ڈیسک بجا کر دونوں کا خیرمقدم کیا۔

دوسری جانب سابق وزیر اعلیٰ شہباز شریف کی گرفتاری کیخلاف اپوزیشن ارکان نے پنجاب اسمبلی کے باہر احتجاج شروع کردیا ہے، دروازہ بند ہونے پر گیٹ پر ہی دھرنا دے دیا ہے،ارکان اسمبلی ”گو عمران گو،رو عمران ر“ کے نعرے لگا رہے ہیں ۔اس سے قبل ترجمان مسلم لیگ نون مریم اورنگزیب کا کہنا  تھا کہ پنجاب حکومت کا پنجاب اسمبلی کے باہر رکاوٹیں اور راستے بند کرنے کا اقدام قابل مذمت ہے۔ کسی بھی منفی صورتحال کے ذمہ دار سپیکر پنجاب اسمبلی اور حکومت ہوگی۔