سعودی عرب میں سب سے بڑے میوزم کی تیاری کیلئے کام شروع

سعودی عرب میں سب سے بڑے میوزم کی تیاری کیلئے کام شروع


ریاض( 24نیوز ) سعودی حکومت نے ملک میں موجود آثار قدیمہ کے تحفظ پر کام شروع کر دیا، دنیا کا سب سے بڑا اوپن ایئر عجائب گھر تیار کرنے کا فیصلہ کیا ہے، میوزیم کی تیاری کیلئے فرانس سے معاہدہ طے پاگیا ہے۔
آثار قدیمہ کسی بھی ملک کا ثقافتی ورثہ ہوتے ہیں، سعودی حکومت نے بھی ملک میں دنیا کا سب سے بڑا اوپن ایئر میوزیم تیار کرنے کا فیصلہ کیا ہے، اس منصوبے کی تکمیل کیلئے سعودی ولی عہد شہزاد محمد بن سلمان نے فرانس سے ایک معاہدہ کیاہے۔
معاہدے کے تحت یہ میوزیم سعودی عرب کے شمال مغربی علاقے العلا میں قائم کیا جائے گا، یہ علاقہ ایک زرخیز وادی میں دو پہاڑوں کے بیچ واقع ہے۔ اس وادی میں کھجور کے درخت اور دیگر پھل ہوتے ہیں، یہ علاقہ قومِ ثمود سے وابستہ ہے، یہاں مدائنِ صالح اور قبل مسیح کے آثار موجود ہیں۔
اس علاقے کی سب سے خاص بات یہ ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم یہاں سے گزرے اور نماز بھی ادا کی، اس کے علاوہ مشہور مسلمان سپہ سالار موسی بن نصیر نے بھی یہاں ایک قلعہ تعمیر کیا تھا، جس کے آثار آج بھی موجود ہیں۔
اس علاقے کو الحجر اور عروس الجبال کے ناموں سے بھی جانا جاتا ہے، یہ علاقہ اپنے اندر کئی قدیم اور اسلامی تہذیبوں کے آثار سموئے ہوئے ہے۔