فاٹا اصلاحات بل، پارلیمنٹ کی راہ داریاں حکومت مخالف نعروں سے گونج اٹھی

فاٹا اصلاحات بل، پارلیمنٹ کی راہ داریاں حکومت مخالف نعروں سے گونج اٹھی


اسلام آباد (24 نیوز) پارلیمنٹ کی راہ داریاں حکومت مخالف نعروں سے گونج اٹھیں،  فاٹا اصلاحات بل کو ایجنڈے سے نکالنے پر قومی اسمبلی کے اندر اور باہر سخت احتجاج، فاٹا ارکان اور اسٹوڈنٹس کی نعرہ بازی، اپوزیشن جماعتوں کی حکومتی پالیسی پر کڑی تنقید۔

 اس حوالے سے شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ آج فاٹا ریفارمز بل کو اچانک غائب کر دیا گیا اور بتایا گیا کہ تکنیکی وجوہات پر بل کو نکالا۔

اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ نے آگاہ کیا   کہ جمعرات کو قادر بلوچ نے بتایاتھا ہم بل لارہے ہیں اور اس پر مجھ سے مشاورت بھی کی۔  اپوزیشن لیڈر نے یہ بھی کہا کہ پاکستان میں پارلیمنٹ سے مذاق قابل قبول نہیں ہے۔

فاٹا کے رکن قومی اسمبلی شاہ جی گل آفریدی نے کہا  کہ راتوں رات ہم پر ڈرون حملہ کیا گیا۔ پارلیمنٹ کا مقصد عوام کو ان کا حق دینا ہوتا ہے نہ کہ حق تلفی کرنا۔

فاٹا کے حکومتی رکن قومی اسمبلی شہاب الدین بولنے کیلئے ڈائس پر آئے تو فاٹا اسٹوڈنٹس اور جے یو آئی ایف کے کارکنان میں سخت تلخ کلامی اور نعرہ بازی ہوئی ۔ پارلیمنٹ کی راہ داریاں حکومت مخالف نعروں سے گونجتی رہیں۔