امریکہ سے پاکستان کو استثنیٰ مل گیا



24نیوز: امریکا نے مذہبی آزادی کی خلاف ورزی سے متعلق خصوصی تشویش والی فہرست میں شمولیت کے باجود پاکستان کو ممکنہ معاشی پابندیوں سے استثنی دے دیا ہے۔

واضح رہے کہ گذشتہ روز امریکی محکمہ خارجہ کی جانب سے جاری کیے گئے بیان میں اعلان کیا گیا تھا کہ بین الاقوامی ایکٹ برائے مذہبی آزادی 1998 کے تحت پاکستان سمیت ایران، سعودی عرب، چین، تاجکستان، ترکمانستان، سوڈان، برما، اریٹریا اور شمالی کوریا کے نام مذہبی آزادی کی خلاف ورزیوں پر خصوصی تشویش والی فہرست میں شامل کیے جارہے ہیں، جس کا مقصد اقلیتوں سے روا رکھے جانے والے سلوک پر دباؤ بڑھانا ہے۔

امریکا نے پھر اوقات دکھا دی ۔۔ ۔ پاکستان کو بلیک لسٹ کردیا

انسانی حقوق کےٹھیکےدارامریکانےمذہبی حقوق کی پامالی کاالزام لگاکرپاکستان کانام بلیک لسٹ میں ڈال دیا۔امن پسندی کاڈھنڈورا پیٹنےوالے امریکاکواپنی ناک کےنیچےفلسطینیوں کاقتل عام کرنےوالااسرائیل اورکشمیریوں کی نسل کشی کرنےوالابھارت نظرہی نہ آیا۔

امریکہ نے پاکستان پر اقلیتوں کو مذہبی آزادی نہ دینے اور ناروا سلوک کا الزام لگا کر بلیک لسٹ میں شامل کردیا ہے۔ پاکستان پرمذہبی آزادی کی پامالی کاالزام لگانےوالے امریکا کادہرامعیاربھی سامنے آگیا۔فلسطین میں نہتےفلسطینیوں اورمقبوضہ کشمیرمیں معصوم کشمیریوں پرمظالم ڈھانےوالے درندہ صفت ممالک اسرائیل اوربھارت کااس فہرست میں دوردورتک کوئی نام نہیں۔کیوں کہ اسرائیل امریکہ کالاڈلہ اورمسلمانوں،سکھوں اورمسیحی اقلیتوں پر ظلم وجبرکےپہاڑتوڑنےوالابھارت انکل سام کابغل بچہ ہے۔

امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ عالمی مذہبی آزادی کا تحفظ امریکہ اور ٹرمپ انتظامیہ کی خارجہ پالیسی کی ترجیح ہے۔امریکہ نے پاکستان کو گزشتہ سال خصوصی واچ لسٹ میں رکھا تھا جبکہ اس سال پاکستان کا نام بلیک لسٹ میں شامل کردیا گیا ہے۔ امریکی وزیر خارجہ کے مطابق پاکستان اس فہرست میں برقرار رہا تو اس پر ممکنہ طور پر جرمانہ بھی عائد ہو سکتا ہے۔

امریکہ نے پاکستان سمیت دس ملکوں کو بلیک لسٹ میں شامل کیا ہے دیگر نو ممالک میں چین، ایریٹریا، میانمار، شمالی کوریا، سعودی عرب، ایران، سوڈان، تاجکستان اور ترکمانستان شامل ہیں۔

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔