وفاقی دارالحکومت میں پینے کے پانی کا شدید بحران


اسلام آباد (24 نیوز) غیر قانونی کنکشنز اور لاکھوں لیٹر پانی کی لیکیج سے پینےکے پانی کا شدید بحران پیدا ہوچکا ہے۔ اسلام آباد کو پینے کے لیے 3کروڑ گیلن پانی مہیا کیا جاتا ہے لیکن انتظامیہ کی نااہلی کی وجہ سے پانی کی شدید قلت پیدا ہوگئی ہے۔

 تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں پینے کا پانی ناپید ہو چکا ہے۔ آخر سملی ڈیم اور خان پور ڈیم سے آنے والا کروڑوں گیلن پانی کہاں جاتا ہے، اسلام آباد میں بچھاے گئے سی ڈی اے کے واٹر سپلائی نیٹ ورک کو جگہ جگہ چھید شدہ ہے، اگر بچا کھچا پانی پائپوں میں پانی آ بھی جائے توفنی خرابیاں اتنی ہیں کہ گھروں تک نہیں پہنچ پاتا، مقامی آبادی کے لوگوں نے خود ہی اعتراف کر لیا کہ یہ تمام کنکشنز غیر قانونی ہیں۔

سی ڈی اے حکام زمینوں کے لین دین ، کچی آبادیوں کی آباد کاری میں بدعنوانی کے حوالے سے بدنام تو ہیں ہی، آپ سن کر حیران ہوں گے کہ اس ادراے کے اہلکار شہر بھر میں غیر قانونی پانی کے کنکشن لگانے میں بھی کسی سے پیچھے نہیں رہے۔

پینے کے پانی کی چوری اور لیکیج سے جہاں وفاقی دارلحکومت پانی کے بحران کا شکار ہو چکا ہے وہاں قومی خزانے کو روزانہ کروڑوں روپے کا نقصان بھی ہو رہا ہے۔