پاکستانی روپے کی قدر ڈالر کے مقابلے میں30فیصدگرگئی، موڈیز رپورٹ جاری

پاکستانی روپے کی قدر ڈالر کے مقابلے میں30فیصدگرگئی، موڈیز رپورٹ جاری


(24نیوز) موڈیزنےپاکستان کے بینکنگ سسٹم کی درجہ بندی کومستحکم سے منفی کردی۔ رپورٹ کے مطابق ایک سال میں پاکستانی روپے کی قدر ڈالرکے مقابلے میں 30 فیصدگرگئی۔

  موڈیز کے مطابق رواں مالی سال کے دوران پاکستانی کی معاشی ترقی کی رفتار سست ہو کر 4.3 فیصد ہونے کا امکان ہے جو گزشتہ مالی سال 5.8 فیصد تک پہنچ گئی تھی جس کے باعث بینکوں کو کاروبار کرنے میں مشکلات کا سامنا رہے گا۔ رپورٹ کے مطابق ایک سال میں پاکستانی روپے کی قدر ڈالرکے مقابلے میں 30 فیصد گری،شرح سود دسمبر 2017 سے فروری 2019 تک 450 پوائنٹ بڑھا ہے۔  ان تمام عوامل سے کاروبار، صارفین کا اعتماد اورنجی شعبے کی قرض واپس کرنےکی صلاحیت متاثر ہوسکتی ہے۔

رپورٹ کے مطابق پاکستانی بینکوں نے حکومتی بانڈز میں بہت رقم لگا رکھی ہےجس کی وجہ سے اگلے ایک ڈیڑھ سال تک بینکوں کے کریڈٹ پروفائل کو کم ریٹنگ والےسرکاری بانڈزاورسست ہوتی معیشت کےچیلنج کا سامنا رہے گا، موڈیز پاکستان کے 5 بڑے بینکوں کی ریٹنگ کرتا ہے،تاہم اس رپورٹ میں کسی قسم کی ریٹنگ کا اعلان نہیں کیا گیا۔

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔