ایف آئی اے کے سرکش ڈپٹی ڈائریکٹر نے لاقانونیت کی تمام حدیں پھلانگ دیں


کراچی (24 نیوز) ایف آئی اے اسلام آباد کے سرکش ڈپٹی ڈائریکٹر نے لاقانونیت کی تمام حدیں پھلانگ دیں۔ قبضہ گروپ بے نقاب کرنے پر اپنے ہی محکمہ کے اہلکار کو حبس بے جا میں رکھا اور تشدد کا نشانہ بنایا۔ ٹوئنٹی فور نیوز کی خبر پر ایف آئی اے ہیڈکوارٹرز میں ہلچل مچ گئی۔

محکمے سے مایوس کانسٹیبل غفور شجاع عباسی اپنا مسئلہ لے کر سپریم کورٹ پہنچ گیا، اہلکار نے انصاف کیلئے درخواست دائر کر دی۔ درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ اس نے سندھ میں رشتہ دار کے فلیٹ پر قابض گروپ کو بے نقاب کیا، تو ڈپٹی ڈائریکٹر علی شیر جکھرانی طیش میں آگیا۔

اہلکار شجاع کو ڈپٹی ڈائریکٹر ایف آئی اے تھانے لے آیا۔ کانسٹیبل شجاع عباسی کو کئی گھنٹے حبس بے جا میں رکھا۔ اس سنگین واقعے پر نا کوئی مقدمہ درج ہوا اور نا ہی انکوائری ہوئی۔

متاثرہ اہلکار شجاع عباسی نے سپریم کورٹ سے استدعا کی کہ اس کی جان کو خطرہ ہے، اسے تحفظ فراہم کیا جائے۔ علی شیر کچھ عرصہ سے ڈیپوٹیشن پر ایف آئی اے اسلام آباد اینٹی کرپشن سرکل میں ڈپٹی ڈائریکٹر تعینات ہیں۔

مذکورہ واقع میں ملوث ڈپٹی ڈائریکٹر علی شیر جاکھرانی کے خلاف اعلیٰ افسر تاحال کارروائی سے گریزاں ہیں۔ ٹوئنٹی فور نیوز پر خبر نشر ہوتے ہی ایف آئی اے ہیڈ کوارٹر میں ہلچل مچ گئی۔ واقع سے ڈی جی ایف آئی اے بشیر میمن کو آگاہ کر دیا گیا ہے۔ ڈپٹی ڈائریکٹر علی شیر جاکھرانی کو بچانے کیلئے متاثرہ کانسٹیبل پر مختلف ذرائع سے دبائو ڈالا جارہا ہے۔