ریلوے حکام کی مبینہ ملی بھگت سے ریل پٹری تجاوزات کی زد میں آگئی


حافظ آباد(24نیوز) ریلوے حکام کی مبینہ ملی بھگت سے ریل پٹری تجاوزات کی زد میں آگئی، تجاوزات سے بڑے نقصان کا خدشہ پیدا ہوگیا، اسٹیشن ماسٹر نے تجاوزات ہٹانے کی ذمہ داری دوسروں پر ڈال دی۔

تفصیلات کے مطابق حافظ آباد ریلوے اسٹیشن سے پھاٹک کا فاصلہ تقریباً 300میٹر ہے اور یہ پھاٹک شہر کے وسط میں واقع ہے۔ ریلوے حکام کی مبینہ ملی بھگت سے پھاٹک کے اطراف تجاوزات کی بھر مار ہے۔اسٹالز پر خریداروں کا رش لگا رہتا ہے۔

شہریوں کے مطابق ریلوے ٹریک کے بالکل ساتھ بنے اسٹالز انتہائی خطرناک ہیں۔گاڑیوں کے گزرنے کے اوقات میں جانی نقصان کا خدشہ رہتا ہے۔

دوسری جانب اسٹیشن ماسٹر جاوید اقبال کا کہنا ہے کہ ریلوے ٹریک کے ساتھ قائم تجاوزات کو ہٹانا انکی ذمہ داری نہیں۔اعلیٰ حکام کو بارہا تحریری طور پر آگاہ کرچکا ہوں۔ ریلوے قانون کے مطابق ریلوے ٹریک کے 100فٹ کے فاصلے پر کوئی بھی کام کرنا غیر قانونی ہے لیکن یہاں ریڑھی بان کھڑے رہتے ہیں جو انتہائی خطرناک ہے۔