جیل آئے یا پھانسی قدم نہیں رکیں گے، نواز شریف


لندن ( 24نیوز ) سابق وزیراعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ اب جیل جانا پڑے یا پھانسی پر چڑھایا جائے لیکن اب ان کے قدم نہیں رکیں گے۔

  لندن میں پاکستانی کمیونٹی سے خطاب کرتے ہوئےان کا کہنا تھا کہ اس مشکل وقت پر اپنی قوم کو تنہا نہیں چھوڑ سکتا۔ جیل کی کوٹھری اپنے سامنے دیکھ کر بھی پاکستان واپس جارہا ہوں، ووٹ کو عزت دو کا وعدہ پورا کرنے جارہا ہوں۔انہوں نے کہا کہ کیا پاکستان کی تاریخ میں کوئی شخص 11 سال قید بامشقت کی سزا سننے کے بعد پاکستان واپس آیا ہے؟ مجھے جس قوم نے تین مرتبہ وزیراعظم بنایا اس کا قرض اتارنے جارہا ہوں۔

سابق وزیراعظم نے کہا کہ کہنے کو پاکستان میں جمہوریت ہے لیکن جمہوریت کے تمام تقاضے کچل دیے گئے ہیں، سچ بولنا مشکل بنا دیا گیا ہے، کردار کشی کا شرم ناک کھیل جاری ہے۔سابق وزیر اعظم نے کہا کہ مجھے جس عدالت نے سزا سنائی وہاں چالیس اور بھی تو ریفرنس چل رہے ہیں۔ کوئی بتائے گا کہ ان ریفرنسز کو کتنے سال ہو گئے ہیں۔ ان ملزمان نے کتنی پیشیاں بھگتیں ہیں۔

سابق وزیراعظم نے کہا کہ کل پاکستان جارہا ہوں، مریم میرے ساتھ ہوں گی، لاہور ایئرپورٹ پر عوام سے خطاب کروں گا۔انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ صرف 13 جولائی کو نہیں بلکہ 25 جولائی کو بھی اسی جذبے کے ساتھ گھروں سے نکلیں