قائداعظم کی تصویر ہٹانے کا معاملہ، علی گڑھ میں کرفیونافذ، انٹرنیٹ سروس معطل


 24نیوز: بھارت میں علی گڑھ یونیورسٹی سے قائد اعظم محمد علی جناح کی تصویرہٹانے کے بعد کشیدہ صورت حال مزید گھمبیرہوگئی۔ شہرمیں کرفیونافذ، انٹرنیٹ سروس معطل کردی گئی۔

تفصیلات کے مطابق بھارتی ریاست اترپردیش کا شہرعلی گڑھ میدان  جنگ  بنا  ہوا   ہے، علی گڑھ مسلم  یونیورسٹی  سے قائداعظم محمدعلی جناح  کی  تصویر ہٹانے کےبعد شروع ہونے والا معاملہ سنگین شکل اختیارکرگیا ہے۔ تصویراتارے جانے پریونیورسٹی کے طلبا سراپا احتجاج ہیں۔یوپی کی متعصب بی جے پی سرکارطلبا کا احتجاج روکنے کے لیے غیرانسانی اقدامات پراترآئی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:گرمیوں کی چھٹیاں؛ محکمہ تعلیم پنجاب، پرائیویٹ سکولز آمنے سامنے
 
گذشتہ شام سے 40ہزارسے زائد طلبا علی گڑھ شہرکی سڑکوں پردھرنا دئیے بیٹھے ہیں، اوراپنے مطالبات پیچھے ہٹنے کو تیارنہیں۔بی جے پی حکومت نے علی گڑھ شہرمیں کرفیونافذ کرکے شہرکے داخلی اورخارجی راستے سیل کردئیے ہیں۔ انٹرنیٹ سروس بھی معطل کردی گئی ہے۔کشیدگی بڑھنے کےبعد حکومت نے علی گڑھ یونیورسٹی میں بجلی اورپانی کی سپلائی روک دی ہے، طلبا کی تحریک ختم کرنے کے لیے یونیورسٹی میں کھانے پینے کی اشیابھی پہنچنے نہیں دی جارہی۔