چیئرمین نیب فیصلہ کریں عزت رکھنی ہے یا عہدہ؟طلال چودھری کا دو ٹوک مؤقف

چیئرمین نیب فیصلہ کریں عزت رکھنی ہے یا عہدہ؟طلال چودھری کا دو ٹوک مؤقف


اسلام آباد( 24نیوز ) وزیر مملکت برائے داخلہ طلال چوہدری نے کہا ہے کہ اگر یہ چیئرمین نیب کی غلطی تھی تو معافی آجانی چاہیے تھی، اگر معافی نہیں آئی تو دانستہ کیا گیا ہے، اب چیئرمین نیب نے فیصلہ کرنا ہے کہ انہیں عزت رکھنی ہے یا عہدہ؟الیکشن میں (ن) لیگ کی کامیابی کو بھی نہیں روکا جاسکتا اور کسی مائی کے لعل میں ہمت نہیں کہ وہ ہمیں پنجاب اوروفاق میں حکومتیں بنانے سے روکے۔

اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ احتساب کے نام پر ہمیشہ جمہوریت پسندوں کو نشانہ بنایا گیا، اسی احتساب کے نام پر (ق) لیگ بنی اور اب اسی احتساب کے نام پر پی ٹی آئی بنانے کی کوشش کی جارہی ہے، احتساب کے نام پر اپنی مرضی کے لیڈرز لانے کی کوشش کی جاتی رہی۔

یہ بھی پڑھیں:مسلم لیگ ن کا نیب کیخلاف قانونی کارروائی کا فیصلہ

انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی میں ایک ایک شمولیت کی چار چار دفعہ خبریں چلاتے ہیں، پہلے کہتے ہیں (ن) لیگ سے علیحدہ ہوگئے، بہت بڑی وکٹ گرگئی، پھر پتا چلتا ہے خان صاحب کے چھوٹے سے ملاقات اور پھر خان صاحب سے ملاقات، پھر چلتا ہے خان صاحب ان کے گھر تشریف لےگئے، جلسے کے لیے پھریہی خبر چلتی ہے۔
طلال چوہدری کا کہنا تھاکہ کسی مائی کے لعل میں ہمت نہیں کہ وہ الیکشن روکے، الیکشن میں (ن) لیگ کی کامیابی کو بھی نہیں روکا جاسکتا، کسی مائی کے لعل میں ہمت نہیں کہ وہ ہمیں پنجاب اوروفاق میں حکومتیں بنانے سے روکے، ہم الیکشن کی تیاری نہیں، نئی حکومت سازی کی تیاری کررہے ہیں۔