جسٹس شوکت عزیز کو عہدے سے ہٹادیا گیا


اسلام آباد (24نیوز) جسٹس شوکت عزیز کو عہدے سے ہٹادیا گیا, جسٹس شوکت عزیز نے اسلام آباد ہائیکورٹ بار کی تقریب میں خطاب کرتے ہوئے قومی اداروں اور عدلیہ پر الزام عائد کیے تھے،ان کو عہدے سے فارغ کرنے کا نوٹیفکیشن بھی جاری کردیا گیا ہے۔

سپریم جوڈیشل کونسل نے جسٹس شوکت صدیقی کو عہدہ سے ہٹانے کی سفارش کردی

متنازع خطاب کرنے پر سپریم جوڈیشل کونسل نے جسٹس شوکت عزیز صدیقی کو عہدہ سے ہٹانے کی سفارش کی ہے۔

 تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ کے سینئر جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے راولپنڈی بار میں رواں برس خطاب کے دوران حساس اداروں پر عدالتی کارروائیوں میں مداخلت کا الزام عائد کیا تھا جس پرسپریم جوڈیشل کونسل کی جانب سے ازخود کارروائی عمل میں لائی گئی تھی۔

 علاوہ ازیں جسٹس شوکت عزیز کے خلاف ریفرنس بھی بنایا گیا تھا۔ ریفرنس میں سینئر جج نے جواب جمع کرایا تھا۔ دوسری جانب سپریم کورٹ آف پاکستان کی جانب سے جسٹس شوکت عزیز صدیقی کے بیان کا ریکارڈ بھی کیا گیا تھا۔

 خیال رہے کہ جسٹس شوکت عزیز صدیقی کے خلاف سپریم جوڈیشل کونسل میں ایک ریفرنس سنہ 2015 میں بھی دائر کیا گیا تھا۔ جس میں ان پر اختیارات سے تجاوز کرتے ہوئے سرکاری گھر پر تزئین و آرائش کے لیے لاکھوں روپے خرچ کرنے کا الزام عائد کیا گیا تھا۔

 واضح رہے کہ سپریم جوڈیشل کونسل پانچ ارکان پر مشتمل ہوتی ہے جس میں سپریم کورٹ کے تین سنیئر ترین ججز کے علاوہ ملک کی پانچوں ہائی کورٹس کے دو سنئیر چیف جسٹس صاحبان شامل ہوتے ہیں۔

 

شازیہ بشیر

   Shazia Bashir   Edito