کھانے کاآرڈر بول کے نہیں اشاروں میں! اسلام آباد میں منفرد طرز کا ریسٹورنٹ

03:06 PM, 11 Sep, 2018

اظہر تھراج

اسلام آباد ( 24نیوز )اللہ نے ہمیں جن صلاحیتوں سے نوازا ہے ان کا ادراق اگر انسان کر لیں تو زندگی میں کبھی کوئی کمی محسوس نہ ہو، اسلام آباد میں موجود ایک ایسا ہی خاندان جس نے اپنی اپنی صلاحیتوں اور قابلیت کو پہچانا اور اپنی کمی کو ہی جیت کا ہتھیار بنا ڈالا ۔
2016ءکی ایک شام جب اسلام آباد کے تین بہن بھائیوں نے نہ رکنے کا عزم کرتے ہوئے ''ابے کھاﺅ کیفے'' کے نام سے اپنے کاروباری سفر کا آغاز کیا ، اعلی تعلیم یافتہ عائشہ ،جواد اور فیضان اپنے گزر بسر کیلئے کیفے چلا رہے ہیں۔
فیضان اے لیول کے بعد کیفے کی دیکھ بھال کررہے ہیں، کاروبار میں بھائی کا ساتھ دیتے جواد اے سی سی اے جبکہ عائشہ نے پی ایچ ڈی کررکھی ہے۔نوکری کے بجائے  اپنے کاروبار کو مزید وسعت دینے کے لئے منصوبہ بندی کررہے ہیں۔
جواد اور فیضان قوت سماعت سے محروم ہیں، اپنی ذہانت سے انہوں نے مینیو بھی الگ انداز سے پیش کیاہے، یہاں آنے والے گاہک اشاروں کی زبان میں اپنا آرڈر لکھواتے ہیں۔


فیضان کو یقین ہے کہ ایک دن ملک کے تمام شہروں میں ابے کھاﺅ کی موبائل فرنچائز ہونگی،وہ کہتے ہیں لاہور اور دیگر شہروں سے ان کو آفر موصول ہوئی لیکن اس کے بارے میں سوچ بچارجاری ہے۔دوسال کی محنت سے اب ''ابے کھاﺅ '' کی ایک فرنچائز اسلام آباد میں شروع کردی گئی ہے جس میں سٹاف اور مالک سمیت قوت سماعت سے محروم ہیں۔
ابے کھاﺅ ایک کیفے نہیں بلکہ نوجوانوں کی ہمت باندھتا ہے،پس پردہ یہاں سے ملنے والے عزم وہمت جیسے لوازمات کی خوشبو اور محنت کا ذائقہ تینوں بہن بھائیوں کو مثالی بناتا ہے۔

مزیدخبریں