وادی اردن کو اسرائیل میں شامل کرنے کامنصوبہ

وادی اردن کو اسرائیل میں شامل کرنے کامنصوبہ


یروشلم(24 نیوز) اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہونے وادی اردن کوصیہونی ریاست میں شامل کرنے کا اعلان کردیا۔ 

ضرور پڑھیں:جگن@9، 20نومبر2019

اپنی قوم سےخطاب کرتے ہوئےنیتن یاہونےارادہ اظہارکیا کہ اگروہ الیکشن جیت گئےتووادی اردن اور شمالی بحیرہ مردار پر صیہونی اجاراداری قائم کر دوں گا۔ نیتن یاہو نے مزید کہا کہ یہ قدم میں الیکشن کے بعد اسی وقت اٹھا سکوں گا جب اسرائیلی عوام مجھے واضح مینڈیٹ دیں۔

2400اسکوائرکلومیٹرپرمشتمل وادی اردن اورشمالی بحیرہ مردار میں65ہزارفلسطینی اورتقریباً11ہزار یہودی آبادہیں۔ یہ علاقہ اسرائیلی فوج کےکنٹرول میں ہےجسے’سی ایریا‘بھی کہاجاتا ہے۔

عرب لیگ نے اسرائیلی وزیراعظم کےاعلان کی مذمت کرتےہوئےکہاکہ یہ اقدام اسرائیل اور فلسطین کےدرمیان امن کےموقع کوضائع کرے گا۔ سعودی عرب نے اس اعلان کو بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی قرار دیتے ہوئے اسے فلسطین کے خلاف اشتعال انگیزی قرار دیا۔ اس معاملے پراوآئی سی کا ہنگامی اجلاس بلانےکااعلان بھی کیا گیا۔

Malik Sultan Awan

Content Writer