تحریک لبیک ، حکومت میں مذاکرات کامیاب، دھرنے ختم کرنے کا اعلان


لاہور (24نیوز) تحریک لبیک یا رسول اللہ کے حکومت کے ساتھ مذاکرات کامیاب، فیض آباد ددھرنا میں جاں بحق ہونے والوں کا مقدمہ درج، خادم رضوی کی جانب سے دھرنا ختم کرنے کا اعلان۔

اس سے قبل سے تحریک لبیک کی جانب سے شاہدرہ چوک، شاہدرہ ٹاؤن، نیازی چوک، ہانڈیاں پل، ٹھوکر نیاز بیگ، ملتان روڈ، قصور روڈ پر احتجاجی دھرنا دیا گیا جس کے باعث معاملات زندگی شدید ترین متاثر ہوئے۔ جگہ جگہ ٹائروں کو آگ لگا کر اہم شہرائیں بند کی گیئں۔

یہ بھی پڑھیں: خادم رضوی ڈٹ گئے،ملک بھر میں احتجاج کا اعلان 

کہیں عوام کے ساتھ تلخ کلامی اور سرکاری و نجی املاک کو نقصان پہنچایا گیا۔ متعدد بسیں اور ہیوی وہیکلز نے اس وقت رکاوٹوں کی شکل اختیار کر لی جب تحریک لبیک کے کارکنان کی جانب سے ٹائروں کی ہوا نکال دی۔

اسی طرح تحریک لبیک یارسول اللہ کے شہر بھر میں احتجاج مظاہرہ موہلنوال چوک، پکامیل، سگیاں، بابو صابو میں احتجاجی مظاہرہ، داتا دربار، سوڈیوال، چونگی امرسدھو، کاہنہ کاچھا، بھٹہ چوک اور داروغہ والا بھی احتجاجی مظاہرہ کیا۔

عوام کا کہنا ہے کہ مظاہرین اور انتظامیہ کی چپکلش میں استحصال صرف عوام کا ہوتا ہے۔ انتظامیہ کو مظاہرین سے قوی مذاکرات کرے تاکہ عوام کو بار بار مشکلات سے دو چار نا ہونا پڑے۔

  تحریک لبیک یا رسول اللہ کے ساتھ مذاکرات میں ناکامی کی صورت میں انسپکٹر جنرل (آئی جی) پنجاب کی جانب سے فورس کا استعمال کرنے کا عندیہ بھی دیا گیا۔ لاہور سمیت صوبہ کے کسی بھی شہر کو بند نہیں ہونے دیا جائے گا۔

پڑھنا نہ بھولیں: نااہلی تاحیات ہو گی یا نہیں؟ فیصلہ کل سنایا جائے گا 

واضح رہے کہ آئی جی آفس میں تحریک لبیک یارسول اللہ کے مظاہرہ کے حوالے سے اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ پر امن احتجاج ہر شہری کا جمہوری حق ہے۔ تاہم سڑکیں بلاک کرنے اور قانون کو ہاتھ میں لینے کی ہرگز اجازت نہیں دی جائے گی۔

اس حوالے سے آئی جی پنجاب نےلاہور اور شیخوپورہ ڈویژن کو الرٹ جاری کر دیا جبکہ شہر کے داخلی راستوں پر اینٹی رائٹ فورس کو تعینات کر دیا گیا۔ فورس کو آنسو گیس، گنوں اور ہینڈ گرنیڈ کے ساتھ لیس کیا گیا ہے تاکہ کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹا جا سکے۔

یہ ویڈیو بھی دیکھیں: