خواجہ برادران 10 روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے

خواجہ برادران 10 روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے


لاہور(24نیوز) احتساب عدالت نے پیراگون ہاؤسنگ سوسائٹی سکینڈل میں گرفتار خواجہ برادران کو 10 روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے کردیا۔

تفصیلات کے مطابق پیراگون ہاؤسنگ سوسائٹی سکینڈل میں گرفتار خواجہ برادران کو احتساب عدالت کے جج نجم الحسن کی عدالت میں پیش کیا گیا,نیب پراسیکیوٹر وارث جنجوعہ نے عدالت کو آگاہ کیا کہ پچاس کنال زمین دے کر چالیس کنال زمین لی اور چالیس کنال کی پلاٹنگ نہیں کی جاسکتی جبکہ سوسائٹی کی رجسٹریشن بھی جعلی ہے۔

نیب پراسیکیوٹر نےکہا کہ لوگوں کو ایسی زمین فروخت کی گئی، جو ان کے نام پر ہی نہیں۔ پیراگون کے نام پر عوام سے کروڑوں کا فراڈ کیا گیا۔ پیراگون کے پاس کل زمین گیارہ سو کنال ہے، سات ہزار کنال نہیں۔ اربوں کی ٹرانزیکشن کی گئیں اور انکے اکاؤنٹ میں سو ملین موجود ہیں۔ کمپنی ریکارڈ کی جانچ کے لیے خواجہ برادران کا 14 روزہ جسمانی ریمانڈ دیا جائے۔

خواجہ برادران کے وکیل ملک امجد نے عدالت کو بتایا کہ نیب نے جو سوالنامہ بھیجا ہے۔ اس کا تحریری جواب دیا گیا۔ پرویز مشرف کے دور میں تین سال تک کرپشن اور اثاثوں کے حوالے سے انکوائری چلتی رہی جس کے بعد کہا گیا کہ کوئی ثبوت نہیں ملا۔

خواجہ برادارن کے وکیل نے مزید کہا کہ عدالت کو تاثر یہ دیا جا رہا ہے کہ خواجہ برادران پیراگون کے مالک ہیں۔ وکیل نے مزید کہا کہ خواجہ برادران کو سہولیات فراہم نہیں کی جا رہی ہیں، گھرسے لائے گئے ناشتے کو واپس بھیجا گیا اور واش روم میں بھی کیمرے لگے ہیں۔

عدالت نے نیب کو حکم دیا کہ جو ملزمان ریمانڈ پر اُن کے پاس جاتے ہیں انہیں سہولیات دی جائیں، اگر باتھ روم میں کیمرے لگے ہیں تو فوری ہٹائے جائیں، کسی نے نماز باجماعت پڑھنی ہے تو اسے جانے دیا جائے۔ عدالت نے تمام دلائل سننے کے بعد خواجہ برادران کو 10 روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے کردیا۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز نیب حکام نے خواجہ سعد رفیق اور خواجہ سلمان رفیق کو عبوری ضمانت خارج ہونے پر احاطہ عدالت سے حراست میں لیا تھا۔