نیند میں میسج کرنے کا مرض عام

نیند میں میسج کرنے کا مرض عام


( 24 نیوز ) نیند میں باتیں کرنے کے بعد نیند کی حالت میں میسج کرنے کے مرض کا انکشاف، ماہرین نے سوتے وقت موبائل فون کو پاس نہ رکھنے کی تلقین کی ہے۔ 

اگر آپ کو سمجھ میں نہ آنے والا ٹیکسٹ میسج موصول ہو تو جان لیں کے میسج بھیجنے والا ایک خاص قسم کی نفسیاتی مرض کا شکار ہو چکا ہے۔ یہ مرض ہو بہو نیند میں باتیں کرنے جیسی ہے۔ اس مرض کا شکار نیند کی حالت میں موبائل فون کا استعمال کرتے ہوئے لا شعوری کی حالت میں کسی بھی نمبر پر ٹیکسٹ میسج سینڈ کر دیتا ہے، ایسے میسجز کو ’ سلیپ ٹیکسٹ ‘  کہا جاتا ہے۔

حیران کن طور پر ٹیکسٹ کرنے والے شخص کو اس بات کا علم بھی نہیں رہتا کہ اس نے کسی کو کوئی پیغام بھیجا تھا یا نہیں، اس کیفیت کو ’پیرا سومنیا‘ کہتے ہیں، یہ مرض بالخصوص یورپ میں تیزی سے پھیل رہی ہے۔

ولانووا یونیورسٹی کے ماہرین کے مطابق کالج کے تقریبا 400 اسٹوڈنٹس سے نیند کے دوران فون کے استعمال کے بارے میں پوچھا گیا،  تقریبا 26 فیصد طلباء نے نیند میں میسج بھیجنے کا اقرار کیا، ان میں سے زیادہ تر طلباء و طالبات سوتے وقت فون اپنے پاس رکھتے ہیں۔ ماہرین نے اس مرض کے شکار افراد کو فون آف کر کے یا بستر سے دور رکھنے کا مشورہ دیا ہے۔