سینیٹ الیکشن کیلئے امیدواروں کے کاغذات کی جانچ پڑتال کا سلسلہ جاری


لاہور(24نیوز) پارلیمنٹ کے ایوان بالا کے انتخابات 3 مارچ کو ہوں گے، پنجاب سے مختلف سیاسی جماعتوں کے 34 امیدواروں نے کاغذات نامزدگی جمع کرائے جن میں سے 14کے کاغذات منظور 3 کے مسترد، 7 امیدواروں کے کاغذات پر فیصلہ محفوظ کرلیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق کل 34 میں سے 14 امیدواروں کے کاغذات منظور ہوئے۔ جن میں ن لیگ کے آصف کرمانی، ہارون اختر، رانا محمود الحسن، مصدق ملک، ملک شکیل اعوان، شیزا فاطمہ اور سمیع اللہ چودھری شامل ہیں۔ ان کےعلاوہ پیپلز پارٹی کے شہزاد علی خان،نوازش علی، تحریک انصاف کی عندلیب عباس، چودھری سرور، مسلم لیگ ق کے کامل علی آغا شا مل ہیں۔جبکہ حنا ربانی کھر کو الیکشن کمیشن نے بینک کلیئرنس سرٹیفیکیٹ جمع کرانے کی ہدایت کی ہے۔ جس پر بحث کرتے ہوئے حنا ربانی کھر کا کہنا تھاکہ دو بار رکن قومی اسمبلی منتخب ہوچکی ہیں تب تو کوئی اعتراض نہیں لگایا گیا۔ الیکشن کمیشن نے اسٹیٹ بنک سے تصدیق شدہ اسٹیٹمنٹ جمع کرانے کی ہدایت کر دی۔

دوسری جانب ن لیگ کی سعدیہ عباسی اور نزہت عامر صادق کے کاغذات بھی نامکمل پائے گئے۔ رانا مقبول پر اعتراض لگایا گیا کہ انہیں سرکاری ملازمت چھوڑے 2 سال مکمل نہیں ہوئے۔ اس لئے وہ سینیٹ الیکشن کیلئے اہل نہیں۔ کامران مائیکل کو بھی بینک اکائونٹس کی تفصیل طلب کرلی گئی۔ ن لیگ کے زبیر گل سے دوہری شہریت چھوڑنے کا سرٹیفیکٹ طلب کرلیا۔ ن لیگ کے رہنما خافط عبدالکریم کے کاغذات تدریسی تجربہ 20 برس سے کم ہونے پر مسترد کر دئیے گئے۔