کراچی،گانگو وائرس کے بعد ’’سپربگ ‘‘ ٹائفائیڈ نےخطرے کی گھنٹی بجادی

کراچی،گانگو وائرس کے بعد ’’سپربگ ‘‘ ٹائفائیڈ نےخطرے کی گھنٹی بجادی


کراچی (24 نیوز) ٹائیفائڈ کاخطرناک جرثومہ جسے "سپربَگ" کہا جا رہا ہے، شہرقائد میں تیزی سے پھیلنے لگا ہے۔

طبی ماہرین کہتے ہیں ٹائیفائڈ ایک مہلک مرض ہے. علاج سے بہتر احتیاطی تدابیر ہیں پانی ابال کر پیئں اور گھروں کے اطراف صفائی کا خاص خیال رکھیں ٹائیفائیڈ کی ویکسین 2 سال سےلے کر بڑی عمر کے ہر فرد کو لگوائیں۔  ماہرامراض ڈاکٹرلالاجعفرکاکہناہے کہ بازار سے ہرگز کوئی ایسی شے نہ کھائیں جو مکمل طور پر پکی ہوئی نہ ہو، فروٹ چاٹ، چھلے ہوئے پھل، دہی بڑے اور سلاد سے دوررہیں۔

ڈاکٹرلالا جعفرنے مزیدکہاکہ حیدرآباد سے شروع ہونے والا سپر بگ ٹائیفائیڈ سکھر اور پھر کراچی تک پہنچ کیا اس کی علامات میں سر میں درد بخار کا تیز ہونا شامل ہے۔ سپر بگ ٹائیفائیڈ سے اب تک بارہ افراد موت کے منہ میں جاچکے ہیں۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ سپر بگ کی صورت میں کسی مستند معالج سے رجوع کیا جائے۔ ماہرین کا مزید کہنا ہے کہ سپر بگ ٹائیفائیڈ پر عموما کوئی دوا اثر نہیں کرتی۔

Malik Sultan Awan

Content Writer