حکومتی حکمت عملی ناکام، گیس بحران شدت اختیار کرگیا

 حکومتی حکمت عملی ناکام، گیس بحران شدت اختیار کرگیا


اسلام آباد (24 نیوز) ملک بھر میں گیس بحران برقرار ہے، صنعتوں اور سی این جی اسٹیشنز کو گیس فراہمی بند کر دی گئی، پاور پلانٹس بند ہونے سے بجلی کی لوڈشیڈنگ بڑھ گئی، وزیراعظم نے وزارت پٹرولیم اور سوئی گیس کمپنیوں کی کارکردگی پر عدم اطمینان کا اظہارکردیا۔

 حکومتی حکمت عملی ناکام،گیس بحران نے شدت اختیار کرلی، کراچی سمیت سندھ بھر میں گیس کی قلت برقرار ہے،سی این جی اسٹیشن،صنعتیں اور رہائشی علاقے گیس کی کمی سے متاثر ہیں،صنعت کاروں نے گیس فراہمی یقینی بنانے کا مطالبہ کردیا۔ لاہور میں بھی گیس نایاب ہوگئی،سی این جی اسیٹشنز بند ہیں،گھروں میں کھانا پکانا مشکل ہوگیا، معمولات زندگی مفلوج ہوئے تو شہری حکومت پر برس پڑے،شکوہ کیا کہ سردیوں کے آغاز سے چولہے ٹھنڈے پڑے ہیں۔

گیس بحران سے فیصل آباد میں بیشتر صنعتیں بند ہوگئیں،بے روزگار مزدور سخت اذیت سے دوچار ہیں،صنعت کاروں نے گیس فراہمی یقینی بنانے کی اپیل کردی۔ ملتان میں ایک لاکھ پاور لومز میں سے80 فیصد انڈسٹری بند ہوچکی ہے،جبکہ باقی20 فیصد کا انحصار لکڑی پرہے، بجلی گھروں کو گیس سپلائی معطل ہونے سے بجلی کی لوڈشیڈنگ میں اضافہ ہوگیا۔

دوسری جانب وزیرِاعظم عمران خان کی زیرصدارت گیس بحران سے متعلق اجلاس ہوا،  جس میں گیس کی موجودہ اور آئندہ برسوں میں طلب ورسد پربریفنگ دی گئی، وزیراعظم نے وزارت پٹرولیم اور سوئی گیس کمپنیوں کی کارکردگی پر عدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے ایل این جی کی درآمداورگیس لوڈمنیجمنٹ پرفوری عملدرآمد کی ہدایت کی،انہوں نے فوری طور پرسبسڈی کم نہ کرنےکی ہدایت کی اورآئندہ اجلاس میں زائد گیس بلوں پر آڈٹ رپورٹ طلب کرلی۔