منی بجٹ کی تاریخ تبدیل


کراچی( 24نیوز )وفاقی وزیر خزانہ اسد عمر نے اعلان کیا ہے کہ منی بجٹ 23 جنوری کو پیش کیا جائے گا، منی بجٹ میں ٹیکس بے ضابطگیوں کو دور کیا جائے گا،ٹیکسوں کے حوالے سے ہر قسم کی تبدیلی پارلیمنٹ کی منظوری سے ہوگی۔

وفاقی وزیر خزانہ اسد عمر نے کراچی چیمبر آف کامرس میں صنعتکاروں سے ملاقات کی، اسد عمر نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ فیڈرل بورڈ آف ریونیو کے سیچوریٹری ریگولیٹری آرڈرز کے اجراءکا اختیار ختم کردیا گیا ہے، ٹیکسوں کے حوالے سے ہر قسم کی تبدیلی پارلیمنٹ کی منظوری سے ہوگی ۔

صنعتکاروں سے ملاقات کے بعد میڈیا سے گفتگو میں وزیرخزانہ کا کہنا تھا کہ اکیسویں صدی میں معیشت کو نجی شعبہ چلاتا ہے، لہذا ہمیں ترجیحات کے مطابق فیصلے کرنے چاہئیں، 23جنوری کو پیش کیے جانے والے فنانس بل میں کاروبار میں آسانیاں اور سرمایہ کاری کے لیے سہولتیں دیں گے-تجارت کے حوالے سے علاقائی ملکوں سے پاکستان کی تجارت کو ترجیح دیں گے اور ترکی اور پاکستان کا مضبوط سیاسی رشتہ معاشی تعلق میں تبدیل کریں گے۔

کراچی کے تاجروں اور صنعتکاروں نے گیس کی عدم دستیابی اور ٹیکس مسائل نہ ہونے پر وفاقی وزیر خزانہ کو اپنے تحفظات سے آگاہ کردیا،سراج قاسم تیلی نے کہا اگر ایف بی آر کو تالا لگا دیں تو شرطیہ 15 فیصد ریونیو بڑھ جائے گا، زبیر موتی والانے کہا گیس بحران کے باعث شدید نقصان ہو رہا ہے،ساتھ ہی کراچی کے ساتھ امتیازی سلوک کو ختم کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ گذشتہ ماہ گیس بحران پر کراچی کی صنعتیں 16 روز بند رہیں اور گیس نہ ملنے سے نصف ماہ صنعتوں میں پیداوار نہیں ہوسکی۔