سپریم کورٹ نے این اے 125 مبینہ دھاندلی کیس کا فیصلہ سنا دیا

سپریم کورٹ نے این اے 125 مبینہ دھاندلی کیس کا فیصلہ سنا دیا


اسلام آباد(24نیوز)  سپریم کورٹ نے این اے 125مبینہ دھاندلی کیس کا فیصلہ سنا دیا. عدالت نے الیکشن ٹریبونل کا فیصلہ کالعدم قرار دے دیا.

جسٹس شیخ عظمت سعید کی سربراہی میں 2دو رکنی بینچ نے فیصلہ سنایا۔الیکشن ٹربیونل نے 2015 میں حامد خان کی عذرداری پر  این اے 125 کے انتخابی نتائج کالعدم قرار دے کر ضمنی انتخاب کا حکم دیا تھا۔جاوید رشید محبوبی نےنتائج کالعدم قرار دے کر ضمنی انتخاب کا حکم دیا تھا۔ خواجہ سعد رفیق نےٹریبونل کے فیصلے کیخلاف سپریم کورٹ سے رجوع کیا تھا۔

سپریم کورٹ نےاین اے 125مبینہ دھاندلی کیس کا فیصلہ سنا دیا۔  سپریم کورٹ کے دو رکنی بنچ نے خواجہ سعد رفیق کی اپیل منظور کر لی۔ عدالت نے الیکشن ٹریبونل کا فیصلہ کالعدم قرار دے دیا ۔ 

واضح رہے کہ   این اے 125 سے خواجہ سعد نے حامد خان کو شکست دی تھی ۔حامد خان نے انتخابی نتائج الیکشن ٹریبونل میں چیلنج کیے تھے۔

وقار نیازی

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔