پاکستان کا تجارتی خسارہ تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا

پاکستان کا تجارتی خسارہ تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا


اسلام آباد(24نیوز) پاکستان کا تجارتی خسارہ تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا،  گزشتہ مالی سال کا مجموعی تجارتی خسارہ 42 ارب 40 کروڑ روپے سے بھی تجاوز کر گیا۔

پاکستان ادارہ شماریات کے مطابق گزشتہ مالی سال کے دوران اشیا کی بیرونی تجارت میں پاکستان کو 37 ارب 67 کروڑ ڈالر کے رکارڈ خسارے کا سامنا رہا جو گزشتہ سال سے 16 فیصد زیادہ ہے جبکہ سروسز کی بیرونی تجارت میں 4 ارب 73 کروڑ ڈالر کا خسارہ ہوا  جو پہلے سے 22 فیصد زیادہ ہے۔  پاکستان مسلم لیگ ن کی حکومت نے اپنے پہلے سال برآمدات کو 25 ارب ڈالر کی بلند ترین سطح پر پہنچانے کا ریکارڈ قائم کیا۔

گزشتہ مالی سال اشیا کی برآمدات کا حجم 23 ارب 22 کروڑ 80 لاکھ ڈالر رہا  جو پہلے سے تقریبا 4 فیصد زیادہ ہے جبکہ اشیا کا درآمدی بل 15 فیصد اضافے سے 60 ارب 89 کروڑ 80 لاکھ ڈالر تک پہنچ گیا۔ اس دوران سروسز کی برآمدات سے 4 ارب 69 کروڑ ڈالر ملے  اور سروسز کی درآمدات پر 9 ارب 43 کروڑ ڈالر خرچ ہوئے۔ حکومت نے تجارتی خسارے کا حجم 29 ارب 40 کروڑ ڈالر تک محدود رکھنے کا ٹارگٹ رکھا تھا۔

 

وقار نیازی

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔