گاڑیوں کی فروخت میں مسلسل کمی

 گاڑیوں کی فروخت میں مسلسل کمی


لاہور(24 نیوز) مہنگائی،روپے کی گرتی قیمت اورنان فائلرپربڑی گاڑیاں خریدنے کی پابندی کے اثرات سامنے آنےلگے، ملک بھرمیں گاڑیوں کی فروخت میں8فیصد تک کمی ہوگئی۔

پاکستان آٹو مینوفیکچرز ایسوسی ایشن کے مطابق مالی سال 2018-19 کے دوران مجموعی طور 2 لاکھ37 ہزار950 گاڑیاں خریدی گئیں جو گزشتہ سال سے 20 ہزار 682 کم ہیں، اس سے پچھلےمالی سال2 لاکھ 58 ہزار 632 گاڑیں فروخت ہوئی تھیں، مالی سال کےآخری ماہ جون میں کاروں کی فروخت میں15 فیصد کمی دیکھی گئی،15 ہزار783 کاریں فروخت ہوئیں۔

گزشتہ سال جون میں18ہزار 518 کاریں خریدی گئیں،رپورٹ کےمطابق سال کے دوران ڈالرکے مقابلےمیں روپے کی قدر میں مجموعی طورپر 27 فیصد کمی دیکھی گئی، جس کےباعث کاریں بنانے والی تینوں بڑی فیکٹریوں نےبھی متعدد بارقیمتوں میں اضافہ کیا، سال کے دوران بنیادی شرح سود مجموعی طور پر475 بیسز پوائنٹ اضافے سے 12.25فیصد تک پہنچ گئی،جس سےکارکے لیے بینکوں سے قرض پہلے سے کافی مہنگا ہوگیا۔