"عمران خان کا لہجہ وزیراعظم کے منصب کیلئے اہل نہیں"



اسلام آباد(24 نیوز) رہنما پیپلزپارٹی قمر زمان کائرہ کی حکومت پر کڑی تنقید کہتے ہیں بجٹ سے پہلے گرفتاریاں بجٹ تقریر سے دھیان ہٹانے کے لیے کی گئیں تاکہ حکومت آئی ایم ایف کا لایا ہوا بجٹ پاس کرا سکے، وزیراعظم عوام کو مس لیڈ کرنا چھوڑ دیں۔

اسلام آباد پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے رہنما پیپلزپارٹی قمر زمان کائرہ نے حکومت کے گزشتہ روز پیش کیے گئے بجٹ اور وزیراعظم عمران خان کی تقریر پر کڑی تنقید کی کہا کھانے پینے کی ہر اشیاء پر آپ ٹیکس لگا رہے ہیں، پھر بجٹ آنے سے قبل کچھ گرفتاریاں ہوئیں تاکہ گرفتاریوں کی وجہ سے بجٹ تقریر سے دھیان ہٹ جائے،بجٹ پر شرائط لاگو ہیں، بجٹ پاس ہوگا تو آئی ایم اہف معاہدے پر دستخط ہوں گے۔

پیپلزپارٹی کے رہنما قمرزمان کائرہ کہتے ہیں عمران خان کا لہجہ وزیراعظم کےمنصب کےاہل نہیں۔وزیراعظم عمران خان کےبارے کچھ کہا جائےتووہ ناراض ہوجاتے ہیں۔انکوائری کمیشن بنانا چاہتےہیں توشوق سے بنائیں۔ پاکستان کا ہرطبقہ پریشان ہے، کھانےپینے کی ہرچیزپرٹیکس لگا دیا گیا ہے۔

قمر زمان کائرہ نے کہا کہ وزیراعظم نے کمیشن کے قیام کی بات کی اور وزیراعظم نے اپنی سربراہی میں کمیشن کے قیام کا کہا پھر بار بار این آر او کی بات کرتے ہیں این آر او ہمارا مطالبہ نہیں تھا اور پیپلز پارٹی نے کوئی فائدہ نہیں لیا لیکن اب تو این آر او کا معاملہ ختم ہوگیا اب تو عوام کو ریلیف دیں۔

سابق صدر آصف علی زرداری کی گرفتاری اور پراڈکشن آرڈر پر قمر زمان کائرہ نے کہا کہ امید ہے اسپیکر قومی اسمبلی کسی سے ڈکٹیٹیشن نہیں لیں گےامید ہے اسپیکر آصف زرداری کے پروڈکشن آرڈر جاری کریں گے۔