بین الاقوامی منظرنامہ: شامی جنگ، جرمن مظاہرے، روسی اور امریکی انکشافات

بین الاقوامی منظرنامہ: شامی جنگ، جرمن مظاہرے، روسی اور امریکی انکشافات


 24نیوز: شام کی سرکاری فوج نے مشرقی غوطہ کے مزید 2 قصبے باغیوں سے چھڑا لیے۔ شہری جان بچانے کے لیے تہہ خانوں میں چھپنے پر مجبور ہوگئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق اب تک علاقہ میں ہلاکتوں کی تعداد ساڑھے گیارہ سو کے قریب پہنچ چکی ہے۔ انسانی حقوق تنظیم کے مطابق شامی فورسز نے غوطہ کے سب سے بڑے شہر دوما کے راستے منقطع کر دیئے ہیں۔ جس سے خوراک اور ادویہ کا بحران پیدا ہونے کا خدشہ ہے۔

جرمنی کے شہر ہمبرگ میں کردوں نے ترک فوج کی طرف سے شام کے شہر عفرین پر ہونے والی جارحیت کے خلاف مظاہرہ کیا۔ مظاہرین نے عالمی طاقتوں سے ہلاکتوں کا نوٹس لینے کا مطالبہ کیا۔ روسی صدر ویلادی میر پیوٹن کے بارے میں ایک نئی دستاویزی فلم میں انکشاف ہوا ہے کہ انہوں نے ایک مسافر طیارے کو مار گرانے کا حکم دیا تھا۔ جس میں مبینہ طور پر بم تھا۔اطلاع تھی کہ اس طیارے سے 2014 کے سوچی سرمائی اولمپکس کی افتتاحی تقریب کو نشانہ بنایا جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں:شام کے جنگ زدہ لوگوں کیلئے عالمی ادارے زندگی کی امید بن گئے


 
 خبررساں ادارے روئٹرز کے مطابق کریملین کے ترجمان دمتری پیسکوف کے صدر پوتن کے اس بیان کی تصدیق کی ہے۔ امریکی محکمہ داخلہ کی سینئر اہلکار ایلس ویلز نے کہا ہے کہ امریکا شمالی کوریا کی طرح طالبان سے براہ راست مذاکرات نہیں کرسکتا کیونکہ ان دونوں حالات کا کوئی موازنہ نہیں۔

واشنگٹن تھنک ٹینک کو اپنے حالیہ دورہ افغانستان کی تفصیلات بتاتے ہوئے ایلس ویلز کا کہنا تھا کہ طالبان اگر مفاہتمی عمل میں شامل ہونا چاہتے ہیں تو وہ پہلے کابل حکومت سے مذاکرات کریں۔

پڑھنا نہ بھولیں:طالبان نے حملوں کی دھمکی دے دی، امریکہ حواس باختہ

 چین کے جلاوطن آرٹسٹ نے آرٹ کا انوکھا فن پارہ بنا دیا۔ ای وی وی نے ربڑ سے 60 میٹر طویل فن پارے میں 300 مہاجرین کی عکاسی کی ہے۔ جو ایک کشتی میں بچوں سمیت چھپ کر یورپ جانے کی کوشش کررہے ہیں۔

اس فن پارے کی 15 مارچ کو سڈنی اوپیرا میں نمائش ہوگی۔