نواز شریف، مریم، صفدر کی سزا معطلی کیخلاف نیب اپیل سماعت کیلئے منظور

نواز شریف، مریم، صفدر کی سزا معطلی کیخلاف نیب اپیل سماعت کیلئے منظور


اسلام آباد(24نیوز) سپریم کورٹ نے شریف خاندان کی سزا معطلی کے اسلام آباد ہائیکورٹ کے فیصلے کے خلاف نیب کی اپیل سماعت کیلئے منظور کر لی، فریقین کے وکلا سے قانونی معروضات طلب کر لی گئیں،  چیف جسٹس نے ریمارکس میں کہا کہ دیکھیں گے کہ معاملے پر لارجر بنچ بنانا ہے یا نہیں.

چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے شریف خاندان کی سزا معطلی کےخلاف نیب کی اپیل پرسماعت کی۔نواز شریف کے وکیل خواجہ حارث نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ مخصوص مقدمات میں ضمانت کا اطلاق انسداد دہشت گردی کیس میں کرنے کی مثال موجود ہے۔ چیف جسٹس نے ریمارکس میں کہا کہ یہ معاملہ کرمنل پروسیجر کورٹ کا ہے، ہائیکورٹ نے کچھ اصولوں کو نظر انداز کیا، یہ صرف ضمانت منظوری کا معاملہ نہیں بلکہ سزا معطلی کا ہے.

چیف جسٹس نے کہا کہ دیکھنا چاہتے ہیں کہ کیا سزا معطل ہوسکتی ہے، کیا اصول قانون اس کی اجازت دیتا ہے،دیکھنا ہے کہ اس بینچ نے فیصلہ کرنا ہے یا پھر لاجر بینچ تشکیل دیں، ہم ہائیکورٹ کا فیصلہ معطل کر سکتے ہیں، بےاعتمادی ختم کر کے عدالتوں پر اعتماد کرنا چاہئیے.

دوران سماعت چیف جسٹس نے خواجہ حارث سے دلچسپ مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ مجھے میرے ڈاکٹر نے کہا ہے جب خواجہ حارث عدالت میں پیش ہوتے ہیں میری دل کی دھڑکن تیز ہوجاتی ہے، چیف جسٹس کے ریمارکس پر کمرہ عدالت میں قہقہے بلند ہوئے۔خواجہ حارث نے استدعا کی کہ کیس کی سماعت دسمبر کے دوسرے ہفتے تک ملتوی کی جائے۔عدالت نے فریقین کے وکلا سے تحریری معروضات طلب کرتے ہوئے کیس کی سماعت 12دسمبر تک ملتوی کر دی.

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔