بھری عدالت میں بوڑھی ماں آبدیدہ

12:59 PM, 12 Sep, 2018

کراچی( 24نیوز ) سندھ ہائی کورٹ نے لاپتہ افراد کی عدم بازیابی پربرہمی کا اظہار کیا ہے،عدالت نے رینجرز، سندھ پولیس اور دیگر فریقین سے لاپتہ افراد کی بازیابی سے متعلق 1 ماہ کے اندر پیش رفت رپورٹ طلب کرلی۔
سندھ ہائیکورٹ میں ایم کیو ایم کے یو سی 26 کے چیئرمین سمیت 25 سے زائد لاپتہ افراد کی عدم بازیابی سے متعلق درخواستوں پر سماعت ہوئی، عدالت میں لاپتہ شہری کی بوڑھی والدہ آبدیدہ ہوگئی،دوران سماعت لاپتہ شہری شیخ محمد کلیم کے والدہ نے موقف اپنا یا کے میرا بیٹا یو سی 26 کا چیئرمین اور 2016 میں لاپتہ ہوگیا وہ میرا واحد سہارا تھا اسے بازیاب کرایا جائے۔


لاپتہ شمشاد کے اہلہ خانہ نے موقف اپنایا کہ ہمارے عزیر کو 2014 سے لاپتہ کیا گیا ہم روز عدالت کے چکر لگاتے ہیں مگر ہمارے پیارے بازیاب نہیں ہوتے۔ جس پر عدالت نے پولیس حکام پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ریمارکس دیئے کہ ان لوگوں کے عزیر آخر کہاں گئے جے آئی ٹی بھی خاص نتائج نہیں دے رہی ، ان لاپتہ افراد کے اہل خانہ کو کیا جواب دیں ؟؟

عدالت نے رینجرز سندھ پولیس اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کو لاپتہ افراد کی بازیابی سے متعلق موثر اقدامات کرنے کی ہدایت کرتےہوئے ایک ماہ کے اندر رپورٹ بھی طلب کرلی۔

مزیدخبریں