انضمام الحق نے بیٹے کی سفارش کی یا نہیں؟


لاہور(24نیوز) چیف سلیکٹر انضمام الحق کا کہنا ہے کہ اپنے بیٹے کی سلیکشن کے لئے نہ کوئی سفارش کی اور نہ ہی دباؤڈالا ،  اس الزام کی تحقیقات ہونی چاہئے۔  اگر الزام ثابت ہو جائے تو چیف سلیکٹر کے عہدے سے استعفیٰ دے دوں گا۔

چئیر مین سلیکشن کمیٹی انضمام الحق،  الزامات کے نرغے میں،  اپنے بیٹے کو جونئیر ٹیم کا حصہ بنانے کے لئے جونئیر سلیکشن کمیٹی پر دباؤ ڈالا  کہ ان کے بیٹے کا سلیکشن کیا جائے جبکہ جونئیر سلیکشن کمیٹی کے چئیر مین باسط علی نے اس بات کی تردید کردی۔انضمام الحق کا کہنا کہ اس الزام کی تحقیق ہونی چاہئے اگر الزام ثابت ہواتو عہدے سے استعفیٰ دے دوں گا۔انضمام الحق پر لگنے والے الزام کے بعد ان کے دوست اور ساتھی کر کٹر محمد یوسف بھی میدان میں آگئے اور کہنے لگے کہ انضمام الحق کی دیانت اور ایمانداری پر کسی کو شبہ نہیں ہونا چاہئے۔
ماضی میں بھی انضمام الحق پر اپنے بھتیجے امام الحق کو قومی ٹیم کے لئے منتخب کرنے کا الزام تھا مگر امام الحق نے اپنی پرفارمنس سے ناقدین کے منہ بند کر دیئے تھے ۔

وقار نیازی

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔