چیف الیکشن کمشنر جسٹس( ر )سردار رضا حکومتی ریڈار پر آگئے

چیف الیکشن کمشنر جسٹس( ر )سردار رضا حکومتی ریڈار پر آگئے


اسلام آباد( 24نیوز ) وفاقی حکومت نے چیف الیکشن کمشنر جسٹس ریٹائرڈ سردار محمدرضا کے خلاف ریفرنس دائر  کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی حکومت نےچیف الیکشن کمشنر جسٹس ریٹائرڈ سردار محمدرضا کے خلاف ریفرنس دائر  کرنے کا فیصلہ کرلیا،سپریم جوڈیشل کونسل میں وزیراعظم عمران خان سے ابتدائی مشاورت کرلی گئی ہے،حتمی فیصلہ دو سے تین روز میں متوقع ہے،چیف الیکشن کمشنر جسٹس( ر )سردار رضا نے صدر مملکت کی جانب سے مقرر کردہ بلوچستان اور سندھ کے ممبران سے حلف لینے نے انکارکردیاتھا ۔

وزیر اعظم و اپوزیشن لیڈر میں اتفاق نہ ہونے اور پارلیمانی کمیٹی میں بھی ڈیڈ لاک پر حکومت نے آئینی اختیار استعمال کیا،وزارت پارلیمانی نے دونون ممبران کی تقرری کی سمری صدر  کوبھجوائی، صدر مملکت نے تقرری کی منظوری بھی دیدی تھی،خالد محمود صدیقی کو الیکشن کمیشن کا ممبرسندھ اور منیر کاکڑ کو ممبر الیکشن کمیشن بلوچستان  تعینات کیا تھا۔

ذرائع کا کہناتھا کہ چیف الیکشن کمیشنر نے دونوں ممبران کی تقرری کو غیر آئینی بھی قرار دیا تھا،چیف الیکشن کمشنر کے دونوں ممبران سے حلف لینے کے انکار پر الیکشن کمیشن کی تکمیل ادھوری ہے، ریفرنس دائر کرنے کے لئے وفاقی حکومت کو مناسب وقت کا انتظار ہے۔

چیف الیکشن کمیشنر نے دونوں ممبران کا حلف لینے سے انکار کیا تو معاملہ پیچیدگی اختیار کرگیا، وفاقی حکومت چیف الیکشن کمشنر کے اقدام کے خلاف ریفرنس دائر کرسکتی ہے، ریفرنس کے لئے وزیراعظم عمران خان سے ابتدائی مشاورت کرلی گئی۔

حتمی فیصلہ دو سے تین روز میں متوقع ہے،چیف الیکشن کمشنر کے خلاف ریفرنس وفاقی وزیر پارلیمانی امور اعظم خان سواتی دائر کریں گے۔