تجارتی خسارہ بڑھنے کی رفتار کو بریک لگ گئی

تجارتی خسارہ بڑھنے کی رفتار کو بریک لگ گئی


کراچی( 24نیوز )درآمدات پر ریگولیٹری ڈیوٹی نے درآمدی بل اور تجارتی خسارہ بڑھنے کی رفتار کم کر دی، مالی سال کے پہلے ماہ تجارتی خسارے میں صرف صفر اعشاریہ تین فیصد ہی اضافہ ہوا۔
جولائی کا تجارتی خسارہ جون سے 16 فیصد کم ہے،نئے مالی سال کے پہلے ماہ کے دوران اشیا کی بیرونی تجارت میں 3 ارب 19 کروڑ 20 لاکھ ڈالر کے تجارتی خسارے کا سامنا رہا، جو گزشتہ سال سے صرف ایک کروڑ ڈالر زیادہ ہے، پاکستان ادارہ شماریات کے مطابق جولائی کے دوران ملکی برآمدات کا حجم 1 ارب 64 کروڑ 60 لاکھ ڈالر رہا، جو گزشتہ جولائی سے 1.2 فیصد زیادہ ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  18۔2017 میں زیادہ منافع برطانوی سرمایہ کاروں نے کمایا
اس دوران پیٹرولیم مصنوعات اور دوسری اشیا کا درآمدی بل 4 ارب 83 کروڑ 80 لاکھ ڈالر تک پہنچ گیا،، جو گزشتہ مالی سال کے اس عرصے سے صرف صفر اعشاریہ چھ فیصد زیادہ ہے، رپورٹ کے مطابق جولائی کی برآمدات جون کے مقابلےمیں اگر چہ تقریبا 13 فیصدکم رہیں،، تاہم درآمدات میں جون کے مقابلے میں 15 فیصد سے زائد کمی کے باعث جولائی کا تجارتی خسارہ جون سے 16 فیصد کم رہا۔