آئی سی سی کا پاکستان کرکٹ کے ساتھ امتیازی سلوک

آئی سی سی کا پاکستان کرکٹ کے ساتھ امتیازی سلوک


دبئی (24نیوز) آئی سی سی کے مجوزہ فیوچر ٹور پروگرام میں پاکستان کے ساتھ امتیازی سلوک ، پاکستان کو آئرلینڈ اور افغانستان سے بھی کم میچز دئیے گئے ہیں ،مجوزہ فیوپر ٹورپروگرام کی منظوری جنوری میں دی جائے گی۔

تفصیلات کے مطابق بھارت نواز انٹر نیشنل کرکٹ کونسل نے پاکستان کو نظر انداز کرنے کی تیاری کرلی ، آئی سی سی کے فیوچر ٹور پروگرام میں پاکستان کو ٹیسٹ کرکٹ میں نووارد آئرلینڈ اور افغانستان کے ساتھ ساتھ زمبابوے سے بھی کم میچز دئیے گئے ہیں۔

انٹر نیشنل کرکٹ کونسل کے مجوزہ فیوچر ٹور پروگرام میں پاکستان کو محض 38 ایک روزہ میچز دئیے گئے ہیں ،دوسری جانب آئرلینڈ کو 42،افغانستان کو 41 اور زمبابوے کو 40 ایک روزہ میچز دئیے گئے ہیں۔

ون ڈے کرکٹ کے ساتھ ساتھ ٹیسٹ کرکٹ میں بھی پاکستان کو نظر اندازکیا گیا ہے ، فیوچر ٹور پروگرام میں پاکستان اور نیوزی لینڈ کو 28،28 ٹیسٹ میچز دئیے گئے ہیں جبکہ بنگلہ دیش جسیی کمزور ٹیم کو 35 ٹیسٹ میچز دئیے جانے کی تجویز ہے۔

جنوری میں ہونے والے بورڈ اجلاس میں آئی سی سی 2019 سے 2023 تک کے فیوچر ٹورز پروگرام کی منظوری دے گی۔