حکومت نے گیس مہنگی کرنے کیلئے کمر کس لی

حکومت نے گیس مہنگی کرنے کیلئے کمر کس لی


اسلام آباد (24 نیوز) حکومت نے گیس کی قیمتوں میں ایک بار پھر اضافے کی تیاریاں کرلیں، وزارت پٹرولیم کے مطابق گیس کی قیمتوں پر سبسڈی مکمل ختم اور قیمتوں میں 30فیصد اضافہ کیا جائے گا۔

 عوام مہنگائی بم کیلئے تیارہوجائیں،حکومت نےگیس کی قیمتوں میں ایک مرتبہ پھراضافے کا پلان بنالیا، آئی ایم ایف نے قرض دینے کیلئے بجلی اورگیس کی قیمتیں بڑھانے کی شرط رکھ دی، ذرائع وزارت پیٹرولیم کا دعوی ہے کہ گیس کی قیمتوں پر سبسڈی مکمل طور پر ختم کی جائے اور گیس کی قیمتوں میں مزید 30 فیصد اضافہ کیا جائے۔

ذرائع وزارت پیٹرولیم کےمطابق پنجاب اور خیبر پختونخوا کے لیے گیس کی قیمتوں میں 121 روپے فی ایم ایم بی ٹی یو اضافے کا امکان ہے،جس سے دونوں صوبوں میں گیس کی قیمت 629 سے 750 روپے فی ایم ایم بی ٹی یو ہوجائے گی۔ سندھ اوربلوچستان کےصارفین کیلئےقیمتوں میں 21 روپے فی ایم ایم بی ٹی یو اضافے کا امکان ہے،جس کے بعد سندھ اور بلوچستان میں گیس کی قیمت 589 سے بڑھا کر610 روپے مقرر کی جائے گی۔

ذرائع کے مطابق سوئی ناردرن گیس کمپنی کو219 ارب روپےجبکہ سوئی سدرن گیس کمپنی کو53 ارب روپےکاریونیو درکارہے،گیس قیمتیں بڑھانے کیلئے وزارت پیٹرولیم نےورکنگ تیارکرلی ہےاورقیمتوں میں ممکنہ اضافہ یکم جولائی سے ہونے کا امکان ہے۔