زیادتی و قتل کے ملزمان سے نمٹنے کیلئے سیف سٹی منصوبہ قصور پہنچ گیا


لاہور (24 نیوز) وزیر اعلیٰ پنجاب میاں محمد شہباز شریف نے زینب کے اغواء، زیادتی اور بعد ازاں قتل کے پیش آنے والے واقعہ کے بعد کی صورتحال کو سامنے رکھتے ہوئے قصور میں سیف سٹی منصوبہ کا فیصلہ کیا ہے۔فیصلہ میں طے پایا ہے کہ شہر بھر میں سی سی ٹی وی کیمرے لگائے جائیں گے۔پنجاب سیف سٹیز اتھارٹی نےسی سی ٹی وی کیمرے نصب کرنے کیلئے سروے اوراقدامات شروع کردیئےگیے۔

یہ بھی پڑھئے: سات سالہ بچی زینب سے زیادتی کے بعد قتل کے ملزم کی مبینہ ویڈیو سامنے آگئی

تفصیلات کے مطابق قصور میں سیف سٹی منصوبہ کے حکم پر ہنگامی عمل درآمد شروع کردیا گیا ہے۔اس حوالے سے شہر کے اہم مقامات پر کیمرے لگانے کے لیے سروے ٹیم قصور پہنچ گئی ہے۔ شہر کے تمام داخلی و خارجی راستوں کے علاوہ حساس مقامات  پلازوں، ہسپتالوں، تعلیمی اداروں، یونیورسٹیزاور اہم شاہراؤں پر سی سی ٹی وی کیمرے نصب کیے جائیں گے۔ ان کیمروں میں ایسا سافٹ ویئر لگایا جائے گا جو انسان کے چہرے کو نمایاں کرے گا۔

اہم خبر:  زیادتی کا نشانہ بننے والی 12کلیوں میں لائبہ بھی شامل

سیف سٹی حکام کا کہنا ہے کہ کیمروں کی تنصیب سے قصور شہر میں جرائم کی روک تھام میں مدد ملے گی۔