سعودی خاتون بہادر کینیڈین قرار

سعودی خاتون بہادر کینیڈین قرار


ریاض( 24نیوز )سعودی خاتون رہف القنون پناہ ملنے کے بعد کینیڈا پہنچ گئی، رہف القنون نے سعودی عرب جانے سے انکار کر دیا تھا،  کینیڈین وزیر خارجہ نے خاتون کو نئی بہادر کینیڈین قرار دے دیا ۔

تفصیلات کے مطابق سعودی خاتون رہف القنون پناہ ملنے کے بعد کینیڈا پہنچ گئی،18 سالہ رہف محمد القنون براستہ بنکاک آسٹریلیا جانا چاہتی تھی ‌لیکن انھیں پہلے کویت واپس جانے کے لیے کہا گیا جہاں ان کا خاندان ان کا انتظار کر رہا تھا، انھوں نے واپس جانے سے انکار کر دیا اور ایئرپورٹ کے ہوٹل کے ایک کمرے میں خود کو بند کر لیا، جس سے انھیں بین الاقوامی توجہ بھی حاصل ہوئی۔

سعودی خاتون رہف القنون  کا کہنا تھا کہ وہ مذہب اسلام چھوڑ چکی ہے اور ڈر ہے کہ اگر مجھےسعودی عرب واپس بھیج دیا گیا تو ان کا خاندان کے افراد انہیں قتل کردیں گےکیونکہ سعودی عرب میں ارتدادِ اسلام کی سزا موت ہے۔

کینیڈا کی وزیر برائے خارجہ امور کرسٹیا فریلینڈ نے سعودی خاتون ’ایک نئی بہادر کینیڈین‘ کے طور پر متعارف کروایا تاہم ان کا کہنا تھا کہ رہف القنون ایک لمبے سفر اور آزمائش کے بعد تھکن سے چُور ہیں اور سنیچر کو کوئی بیان نہیں دیں گی۔