آئین سے کھلواڑ کون کر رہا ہے؟ محمود اچکزئی نے حقیقت سے پردہ اٹھا دیا


اسلام آباد (24 نیوز) سینیٹ چیئرمین اور ڈپٹی چیئرمین کے انتخاب نے مسلم لیگ ن کی ساکھ کو مزید متاثر کر کے رکھ دیا ہے۔ مسلم لیگ ن کے جیالے بھی میدان میں آ چکے ہیں۔

پختونخوا ملی پارٹی کے سربراہ محمود خان نے کہا ہے کہ آئین کو کوئی درخور اعتنا نہیں سمجھ رہا ہے۔ یہ پاکستان ہے، یہ ایک رضا کارانہ فیڈریشن ہے۔ اس میں سندھ، پنجابی، سرائیکی اور پشتون اپنی مرضی سے شامل ہوئے ہیں۔ ہم سب خود کو پاکستانی کہتے ہیں۔

یہ بھی پڑھئے: نواز شریف اور ساتھی محفوظ،عمران خان پھنس گئے

اپنے جوشیلے خطاب میں انھوں نے واضح کیا کہ ہمیں پاکستان کے اندر اگر کسی رسی نے ایک ساتھ باندھا ہوا ہے تو اس رسی کا نام پاکستان کا آئین ہے۔ چونکہ ہم سے حلف لیا گیا تھا کہ جب آئین خطرہ میں ہو تو ہم کو بولنا ہو گا۔

انھوں نے مزید کہا کہ سینیٹ ہاؤس آف فیڈریشن ہے۔ جب زر اور زور کا استعمال ہو گا تو پاکستان کی بنیادیں ہل جائیں گی۔ میں فوجی افسر کا نام لے کر کہا تھا کہ وہ صوبائی امور میں مداخلت کر رہا ہے۔ میں پاگل ہوں نہ بیزار۔ آئین سے کھلواڑ کر کے بربادی بنیاد رکھ دی گئی ہے۔

پڑھنا نہ بھولئے: پاکستان کی جمہوریت جوتوں کی زد میں آگئی، عمران خان پر دوسرا وار

آئین کا حلف لینے والے ہی آئین سے کھلواڑ کر رہے ہیں۔ آئین کو خطرہ لاحق ہے سو ہم کو آواز اٹھانی چاہیے۔