ماڈل عبیرہ قتل کیس کا فیصلہ آ گیا، عظمیٰ راؤ کو سزائے موت

ماڈل عبیرہ قتل کیس کا فیصلہ آ گیا، عظمیٰ راؤ کو سزائے موت


لاہور (24 نیوز) ماڈل عبیرہ قتل کیس میں جرم ثابت ہونے پرعظمیٰ راؤکوسزائے موت سنادی گئی، عظمیٰ راؤنے اپنی دوست ماڈل عبیرہ کوزہر دے کر قتل کر دیا تھا۔ عدالت نے دوملزموں کوشک کی بنیاد پر بری کر دیا۔

عظمیٰ راؤ عرف طوبیٰ کو چھ سالہ بیٹی کے ہمراہ سیشن جج عائشہ کی عدالت میں پیش کیاگیا، فیصلہ آنے سے پہلے ہی ملزمہ عظمیٰ راؤ کی آنکھوں میں آنسو تھے۔

یہ بھی پڑھئے:قصور کے بعد ظفروال کی زینب بھی درندگی کا نشانہ بن گئی

عظمیٰ راؤ نے حسد اوررقابت پراپنی دوست ماڈل عبیرہ کو اپنے گھر میں زہردے کرقتل کیا، پھربے دردی سے اس کی لاش کے ٹکڑے ٹکڑے کیے اور اسے ایک صندوق میں ڈال کر لاہور لاری اڈے پر چھوڑ آئی۔

عظمیٰ راؤ کو بس اسٹینڈ کی سی سی ٹی وی فوٹیج اور فون ریکارڈ کی بنیاد پرحراست میں لیا گیا۔ اس کے ساتھ ہی دو افراد فاروق الرحمان اورحکیم ذیشان حیدر کو بھی اعانت قتل کے جرم میں گرفتار کیا گیا تھا۔

پڑھنا نہ بھولئے: پاکستان کی جمہوریت جوتوں کی زد میں آگئی، عمران خان پر دوسرا وار

اس مقدمہ میں استغاثہ کی جانب سے 34گواہ پیش کیے گئے۔ اس مقدمہ کی اہم بات یہ ہے کہ اس میں ایک خاتون قتل ہوئی جسے ایک خاتون ہی نے قتل کیا اور اس کیس کا فیصلہ ایک خاتون جج نے ہی سنایا۔