معاشی استحکام کیلئے امن ناگزیر،بھارت ایک قدم بڑھائے ہم 2بڑھائینگے:شاہ محمود قریشی



اسلام آباد( 24نیوز )وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ معاشی استحکام کیلئے امن ناگزیر، بھارت ایک قدم بڑھائے ہم 2بڑھائینگے۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے  بزنس لیڈرز سمٹ سے خطاب میں کہا ہے کہ سمٹ  میں آنیوالے تمام شرکاء کا خیر مقدم کرتے ہیں، ایک سال میں پاکستان میں سیاسی سطح پر نمایاں تبدیلیاں رونما ہوئیں، عوام نے دیگر جماعتوں کو مسترد کر کے تحریک انصاف پر اعتماد کیا، عوام نے تحریک انصاف کے تبدیلی کے نظریے کی حمایت کی،جی ایس پی پلس کے حصول میں یورپی یونین کی حمایت پر مشکور ہیں۔

انہوں نے کہا ہے کہ 26مارچ کو پاکستان اور یورپی یونین کے درمیان ایک معاہدہ ہونے جا رہا ہے، معیشت کی بہتری کیلئے تاجر برادری کو ساتھ لیکر چل رہے ہیں،ملک کو معاشی طور پر مستحکم بنانا ترجیح ہے، پاکستانی اپنے مستقبل کے بارے میں پر امید ہیں، ہمارے حکومت میں آنے کا مقصد بیرون ملک اکاؤنٹس اور جائیدادیں بنانا نہیں :شاہ محمود اقتصادی بحالی بڑا چیلنج ہے لیکن کامیاب ہوں گے، وزیر خزانہ اسد عمر ملک کی معاشی حالت بہتر بنانے کیلئے کوشاں ہیں۔

انہوں نے کہا کہ جی ڈی پی بڑھانے اور خسارہ کم کرنے کیلئے اقدامات کر رہے ہیں، ماضی کی حکومتوں نے قرضوں میں ہوشربا اضافہ کی، زراعت کا شعبہ بہتر ہونے سے تیز تر معاشی بحالی ہو سکتی ہے، گزشتہ برسوں میں بیرونی سرمایہ کاری میں نمایاں کمی آئی،ماضی کی غلط پالیسیوں سے غریب اور پسماندہ طبقے کی مشکلات بڑھیں،ملک میں غربت کی وجہ سے تمام معاشی اشاریے غلط سمت میں جا رہے تھے، غربت کا خاتمہ وزیراعظم عمران خان کی اولین ترجیح ہے،درست معاشی پالیسیوں سے اداروں کو بہتر سمت میں گامزن کر رہے ہیں۔

خطاب میں ان کا کہنا تھا کہ معاشی استحکام کیلئے امن ناگزیر ہے،مشرقی اورمغربی سرحد پر کشیدہ صورتحال کا سامنا رہاہے، افغانستان میں امن عمل کیلئے کوشاں ہیں،یقین ہے کہ افغان امن مذاکرات سے صورتحال بہتر ہو گی، وزیراعظم نے پہلے دن سے ہی بھارت کو مذاکرات کی دعوت دی، بھارت کو تمام تصفیہ طلب امور مذاکرات سے حل کرنے کی بارہا دعوت دی،وزیراعظم نے بھارت سے کہا کہ آپ ایک قدم بڑھاؤ ہم دو بڑھائیں گے،کرتار پور سرحد کھولنا ہماری طرف سے خیر سگالی کی مثال ہے۔

ان کا مزید کہنا ہے کہ مشرقی سرحد پر امن کیلئے ہمارے اقدامات کا مثبت جواب نہیں دیا گیا، چین زراعت اور دیگر شعبوں میں وسیع تعاون کر سکتا ہے،اکنامک زونز قائم کرنے کےبجائے گزشتہ حکومت نے میٹرو اور دیگر منصوبے لگائے پاکستان اپنے جغرافیائی محل وقوع سے بڑے پیمانے پر استفادہ کر سکتا ہے، ملائیشیا کے وزیر اعظم اپنے وفد کے ہمراہ جلد پاکستان کا دورہ کررہے ہیں، قطر سمیت دیگر دوست ممالک پاکستان میں سرمایہ کاری کرنا چاہتے ہیں۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer