نوازشریف کے بیان سے پاکستان کا وقار مجروح ہوا ہے:شیری رحمان


کراچی(24نیوز ) قائد حزب اختلاف سینیٹ شیری رحمان   نے   پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا ہے کہ نوازشریف نے پاکستان کے وقارکانہیں سوچا، نوازشریف کابیان افسوسناک ہے۔ پاکستان پیپلز پارٹی اس قسم کے بیانیے اور مؤقف کو رد کرتی ہے.

کراچی میں   شیریں رحمان نے  پیپلز پارٹی ر ہنماوں کے  ہمرہ  پریس  کانفرنس  کرتے ہوئے کہنا  تھا   کہ  نوازشریف کا بیان   افسوسناک  ہے، نوازشریف   نے پاکستان کے وقارکانہیں سوچا، ممبئی حملے میں پاکستان کاکوئی ہاتھ نہیں، پاکستان کامقدمہ کمزورکیا جا رہا ہے۔  3 بار وزیراعظم  بننے والا پاکستان مخالف  بیان   دے  رہا ہے،  نواز شریف نے پاکستان کا  بیانیہ کمپرومائز  کرنے کی کوششیں کی ہیں،  نواز شریف نے مودی کے مؤقف پر ٹھپہ لگا دیا، پاکستان دہشتگردی کے خلاف اکیلا جنگ لڑ رہاہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان پیپلز پارٹی اس قسم کے بیانیے اور مؤقف کو رد کرتی ہے، ہم پاکستان کا مقدمہ ہر سطح پر لڑیں گے، پاک فوج نے دہشتگردی کے خاتمے کےلیے قربانیاں دی ہیں، کون کہتا ہے پاکستان ممبئی حملوں کا ٹرائل نہیں چاہتا، بھارت پاکستان کے ساتھ تعاون نہیں کر رہا، نواز شریف کے مؤقف سے دنیا بھر میں سوالات اٹھ رہے ہیں۔ ہم پاکستان میں امن چاہتےہیں، امن سےہی روزگارکےثمرات دے سکتےہیں, دہشتگردی عالمی مسئلہ ہے کسی ایک ملک کی ذمےداری نہیں، دہشتگردی کےخلاف پاکستان کی جنگ میں زہر گھولنا برداشت نہیں کریں گے، نواز شریف کیا تجزیہ کار ہیں جو ایسے بیانات دے رہے ہیں، 10 سال بعد ہمیں فریق بنایا گیا، پاکستان کےدفاع میں ہم فرنٹ لائن ہوتے ہیں۔

شیریں رحمان کا کہنا تھا کہ پیپلزپارٹی کی دہشتگردی کےخلاف قربانیوں پر مذاق اڑایا جاتا ہے، بھارتی میڈیا جو پاکستان کے خلاف کر رہا ہے اس کو روکا جائے، اللہ ان کو ہدایت کریں گےوہ وضاحت دیں گے، ممبئی ٹرائل کے سارے شواہد پاکستان نے دیئے ہیں، اگر آپ نے دہشتگردی خلاف جنگ لڑنی ہے تو پاکستان کے اندر لڑنی ہے، 20نکاتی ایجنڈا تھا، بیان پڑھا تومیں نےسمجھانوازشریف اپنےبیان پرکچھ کہیں گے، دن گزر گئے ایک طرف کا لعدم تنظیموں سے اتحاد کیے جاتے ہیں،چودھری نثار کے مؤقف پر کوئی دو رائے نہیں ہے، 4 چار سال پاکستان میں وزیر خارجہ نہیں ہوتا، خارجہ کی مستقل غیر موجودگی عوام کے لیے بڑے صاحب نے یہ کیوں نہیں بتایا کہ پاکستان نےٹرائل مکمل کرنیکی کیا کوششیں کیں، راتوں رات وزارتوں کی بندربانٹ ہو رہی ہے۔

شیری رحمان کا مزید کہنا تھا کہ وزیر خارجہ کی تعیناتی سے ہمیں فائدہ نہیں ہے، وزیر خارجہ کے عہدے پر بھی تعیناتی کی جائے واشنگٹن، ماسکو، اقوام متحدہ سےمراسلےکون دیکھ رہا ہوتاہے؟  پیپلز پارٹی کےلیےپاکستان میں کوئی مستقل مقدس گائے نہیں ہے، نواز شریف ایسے بیانوں سے توجہ ہٹا نہیں سکتے، نواز شریف سیاسی شہید نہ بنے وضاحت دیں، نواز شریف کے بیان سے پاکستان کا وقار مجروح ہوا، وزیر خارجہ کی تعیناتی مستقل ضرورت ہوتی ہے۔

شازیہ بشیر

   Shazia Bashir   Edito