شاہ زیب قتل کیس، شاہ رخ جتوئی اور سراج تالپور کی سزائے موت عمر قید میں تبدیل

شاہ زیب قتل کیس، شاہ رخ جتوئی اور سراج تالپور کی سزائے موت عمر قید میں تبدیل


سندھ ہائی کورٹ نے شاہ زیب قتل کیس میں مجرم شاہ رخ جتوئی اور سراج تالپور کی سزائے موت کو عمر قید میں تبدیل کردیا۔  دیگر مجرموں کی عمر قید کو برقراررکھا گیا۔  شاہ رخ جتوئی نے فیصلہ کے خلاف سپریم کورٹ جانے کا فیصلہ کرلیا۔

سندھ ہائی کورٹ میں ہوئی شاہ زیب قتل کیس مجرم شاھ رخ جتوئی اور دیگر کی سزا خلاف اپیل پر سماعت ہوئی جس پر سندھ ہائیکورٹ نے مجرموں کی سزا کے خلاف اپیل پر فیصلہ سناتے ہوئے مجرم شارخ جتوئی اور سراج تالپور کی سزائے موت کی سزا کو عمر قید میں تبدیل کردیا ۔

2012 میں کراچی کے علاقے ڈیفنس میں فائرنگ کے نتیجے میں 26 سالہ نوجوان شاہ زیب خان کا قتل ہوا تھا، جس کے قتل کیس میں شاہ رخ جتوئی ، سراج تالپور ، سجاد تالپور اور غلام مرتضی لاشاری کو گرفتار کیا گیا تھا ۔

جون 2013 میں انسداد دہشت گردی کی عدالت نے کیس کا فیصلہ سنایا تھا۔ عدالت نے جرم ثابت ہونے پر دو مجرموں شاہ رخ جتوئی اور سراج تالپور کو سزائے موت جبکہ سجاد تالپور اور غلام مرتضی لاشاری کو عمر قید کی سزا سنائی تھی ۔

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔