"انڈہ جی"، "بابا جی"، سینیٹ اجلاس مچھلی منڈی بن گیا



اسلام آباد(24نیوز) سینیٹ اجلاس میں تلخ جملوں کی گرما گرمی برقرار، سینیٹر مشاہد اللہ خان اور سینیٹر فیصل جاوید کے مابین کبھی دلچسپ تو کبھی تلخ جملہ بازی ہوئی۔

چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کی زیر صدارت سینیٹ اجلاس میں پی آئی اے ہیڈ کوراٹر منتقلی معاملے پر بحث کے دوران سینیٹر فیصل جاوید سینیٹر مشاہد اللہ خان کی تقریر کے دوران بول پڑے جس پر ایوان کا ماحول گرما گرمی میں بدل گیا۔مشاہد اللہ نےفیصل جاوید کو"انڈا جی" کہا جس پر سینیٹر فیصل جاوید سیخ پا ہو گئے اور سینیٹر فیصل جاوید نے سینیٹر مشاہد اللہ کی تقریر کے دوران مشاہد اللہ کو "باباجی" کہہ دیا۔ سینیٹر مشاہد اللہ نے جوابی وار کرتے ہوئے کہا کہ انڈے سے چونچ باہر نکالیں تو پتہ چلے۔ مجھے ابا جی کہو گے تو میں "چوزہ" ہی کہوں گا، دونوں ارکان کی جملہ بازی پر ایوان میں موجود دیگر ارکان نے خوب قہقہے لگائے۔

سینیٹر مشاہد اللہ نے کہا کہ مزاق بنایا ہوا ہے جو کھڑا ہوتا ہے من من من من کرتا ہے، یہ دو تین لوگ ماحول خراب کرتے ہیں.آرام سے آئیں اور ادھر آکر سیکھیں،جس پر سینیٹر فیصل جاوید نے کہا کہ ہمیں آپ اخلاقیات نہ سیکھائیں۔

دونوں ارکان کے مابین تو تکرار چلتی رہی،سینیٹر مشاہد اللہ نے کہہ دیا آپ "علیمہ باجی" سے اخلاقیات سیکھیں جس پر سینیٹر فیصل جاوید مزید غصہ ہو گئے اور کہا کہ انکی عمر دیکھیں اور کرتوت دیکھیں چئیرمین نے قابل اعتراض الفاظ حذف کرنے کی ہدایت کی۔

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔