کراچی: دو بچوں کی جان لینےوالے ریسٹورنٹ سے تین سالہ پرانا گوشت بر آمد

کراچی: دو بچوں کی جان لینےوالے ریسٹورنٹ سے تین سالہ پرانا گوشت بر آمد


کراچی(24نیوز)  2بچوں کی موت کا باعث بننے والے ریسٹورنٹ سے سامان غائب کرنے کی کوشش ناکام بنادی گئی۔ ہوٹل میں تین سال پرانا گوشت استعمال کرنے کا بھی انکشاف ہواہے۔

 کراچی کا معروف ریسٹورنٹ جہاں ہفتے کی رات کھانا کھا کر گھر جانے والے دو بچے زہر خورانی کے باعث جاں بحق ہوگئے تھے جس کے بعد ریسٹورنٹ کو سیل کردیا تھا ۔ ریسٹورنٹ انتظامیہ نے سیل کئے گئے ریسٹورنٹ کے ساتھ واقع گودام سے سامان غائب کرنے کی کوشش کو سندھ فوڈ اتھارٹی اور پولیس نے ناکام بنادیا ۔ 

ڈپٹی ڈائریکٹر سندھ فوڈ اتھارٹی ابرار شیخ کا کہنا ہے کہ مخبر کی اطلاع پر چھاپہ مارا گیا، سیل کیے گئے ریسٹورنٹ کے گودام سے بھاری تعداد میں زائد المعیاد کھانے پینے کی اشیا بھی برآمد ہوئی ہیں۔ ڈائریکٹر سندھ فوڈ اتھارٹی کے مطابق گودام سے دو من کے لگ بھگ سڑا ہوا گوشت برآمد کیا گیا،  ریسٹورنٹ کے گودام میں تین سال پرانا گوشت استعمال کیا جارہا تھا۔

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔