جج جتنی تنخواہ لیتےہیں اتناکام بھی کریں: چیف جسٹس


لاہور (24 نیوز)  چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار کا کہنا ہے کہ انصاف میں تاخیر کی ایک وجہ عدلیہ کی نااہلی بھی ہے لہذا ہ کم کیسزنمٹانے والے ججوں کیخلاف کارروائی کی جائے گی۔

تفصیلات کے مطابق لاہور میں سپریم کورٹ بار سے خطاب کرتے ہوئے چیف جسٹس نے لاہورہائیکورٹ کی کارکردگی پرتنقید کرتے ہوئے کہا کہ کم کیسزنمٹانے والے ججوں کیخلاف کارروائی کی جائے گی،لوگوں کوانصاف نہیں مل رہا،ملک میں بنیادی حقوق محفوظ نہیں، بابارحمتےکاکردارایک منصف کاکردار ہے، جن معاملات کا نوٹس لیا ان کاحل نہیں ملا،نوٹس کامقصدانتظامیہ کواحساس دلاناتھا،قوانین میں ترامیم اور جدیدذرائع سےاستفادہ کرناہوگا، لاپتہ افرادکیلئےاداروں سےبات کی ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ آج سب سے زیادہ تنخوا ہ جج کی ہے، ایک جج کا یومیہ خرچ 55 ہزار روپے ہے لیکن ججز کے پاس مقدمات کئی کئی دن زیر التواء رہتے ہیں، جج جتنی تنخواہ لیتےہیں اتناکام بھی کریں, جب جج ذمہ داری پورے نہیں کریں گے تو فیصلوں میں تاخیر ہوگی۔