سعودی شہزادے کی بہن کو مزدور کو پٹوانے اور پاؤں چومنے پر مجبور کرنے پر سزا

سعودی شہزادے کی بہن کو مزدور کو پٹوانے اور پاؤں چومنے پر مجبور کرنے پر سزا


پیرس(24نیوز) فرانسیسی عدالت نے سعودی شہزادی حصہ بنت سلمان کو مزدور کو اپنے گارڈ سے پٹوانے اور پاؤں چومنے پر مجبور کرنے پر 10 ماہ معطل سزا دے دی ۔

عرب میڈیا کے مطابق سعودی شاہ سلمان کی بیٹی اور سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کی بہن پر یہ الزام تھا کہ انہوں نے 2016 میں مزدور کو اپنے گارڈ رانی سعیدی کو پلمبر اشرف عید کو پیٹنے کے احکامات دیئے۔ واقعہ اس وقت پیش آیا جب  شہزادی حصہ سیر و تفریح کیلئے پیرس میں ارب پتی شخصیات کے پسندیدہ مقام فوش ایوینیو پر واقع لگژری اپارٹمنٹ میں موجود تھیں۔ شہزادی نے اشرف عید نامی شخص کو واش بیسن ٹھیک کروانے کیلئے بلایا۔ اشرف نے بیسن ٹھیک کرنے کے بعد واش روم کی تصاویر لیں جسے دیکھ کر شہزادی غصے میں آگئی اور اپنے گارڈ کو بلوا کر مزدور کو پٹوایا۔ اس دوران شہزادی نے مزدور سے کہا کہ میرے پاؤں چومو ورنہ مار کھاتے رہو۔ پلمبر اشرف نے عدالت میں مزید بتایا کہ شہزادی اپنے گارڈ کو کہتی رہی کہ اس کو کتوں کی طرح ماردو اسے جینے کا کوئی حق نہیں۔ پلمبر نے بتایا کہ اس کا فون بھی توڑ دیا گیا اور اسے کئی گھنٹوں تک یر غمال بھی بنایا گیا۔ 

عدالت نے کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے شہزادی حصہ کو 10 ماہ قید کی معطل سزا اور 11 ہزاریورو جرمانہ بھی کر دیا۔   شہزادی ٹرائل کے دوران کبھی عدالت میں پیش نہیں ہوئیں اور انہیں غیر موجودگی میں سزا سنائی گئی۔ عدالت نے شہزادی سے رابطے کی متعدد کوششیں کیں تاہم ناکامی پر انہوں نے 2017 میں ان کے انٹرنیشنل وارنٹ گرفتاری جاری کردیے تھے۔

دوسری جانب  عدالت نے باڈی گارڈ رانی سعیدی کو 8 ماہ قید کی معطل سزا اور 5 ہزار یورو جرمانہ عائد کیا ہے۔ شہزادی اور گارڈ کو معطل سزا ملی ہے جس کی وجہ سے انھیں قید نہیں کیا جائے گا کیوں یہ سزا علامتی ہوتی ہے۔

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔